امریکی تیل مارکیٹ کریش کرگئی/ کوئی مفت لینے کو تیار نہیں

امریکی خام تیل کے ذخیرے بھر گئے، کورونا وائرس کی وجہ سے کئی ملکوں کی طلب کم ہوگئی،تیل کے کنویں بھی بند، 250فیصد سے زیادہ کمی، تاریخ میں پہلی بار منفی زون میں ٹریڈنگ، ڈائو جانس اسٹاکس 2.4 فیصد کم ہوگئے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی خام تیل کے ذخیرے بھر گئے، کورونا وائرس کی وجہ سے کئی ملکوں کی طلب کم ہوگئی،تیل کے کنویں بھی بند، 250فیصد سے زیادہ کمی، تاریخ میں پہلی بار منفی زون میں ٹریڈنگ، ڈائو جانس اسٹاکس 2.4 فیصد کم ہوگئے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے جہاں ایک طرف دنیا کی معیشت کو بدترین نقصانات کا سامنا ہے تو دوسری طرف لاک ڈائون اور ٹرانسپورٹ کی بندش کی وجہ سے دنیا میں تیل کی ضرورت آدھے سے بھی کم ہوگئی ہے جس کی وجہ سے تیل پیدا کرنے والے ممالک کو بھی شدید نقصانات کا سامنا ہے۔ ماہرین کاکہناہےکہ صورتحال ہارر شو جیسی ہے۔ پیر کا دن تیل کی صنعت کیلئے بدترین دھچکا ثابت ہوا، امریکہ اور کینیڈا میں آئل مارکیٹس کریش کر گئیں جبکہ قیمتیں صفر سے بھی نیچے چلی گئیں۔ 

آئل مارکیٹ کریش ہونے کے نتیجے میں قیمتوں نے منفی میں جاکر نئی تاریخ رقم کر لی، ذرائع‏ کے مطابق  1946ء کے بعد یہ پہلی مرتبہ ہے کہ امریکہ میں مستقبل کے تیل کے سودے اور ویسٹ ٹیکساس کی قیمتیں زمین بوس ہو کر صفر سے بھی نیچے گر گئے ہیں۔ 

تیل کی پیداوار میں خود کو خود کفیل سمجھنے والے ملک امریکہ کےخام تیل کی قیمتیں منفی 37ڈالرز فی بیرل تک جا پہنچیں اور مراعات اور سستا تیل فروخت کرنے کے لالچ اور پیشکشیں بھی کام نہیں آرہی ہیں، یہی وجہ ہے کہ مستقبل کے تیل کے سودے صفر سے بھی نیچے جا چکے ہیں۔ 

تقریباً 8 دہائیوں کے دوران امریکی تاریخ میں ہونے والا سب سے بڑا نقصان قرار دیا جا رہا ہے کیونکہ تیل کی قیمتیں پہلے اتنی کم ترین سطح پر کبھی نہیں آئیں۔ امریکہ میں ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیٹ خام تیل منفی 37 ڈالرزفی بیرل پر فروخت ہو رہا ہے جبکہ انٹرنیشنل بینچ مارک برینٹ کروڈ اپنی کم ترین سطح 26.35؍ ڈالر فی بیرل پر فروخت ہو رہا ہے۔ ادر امریکہ کے سابق صدر اوبامہ کے مشیر کا کہنا ہے کہ صدر ٹرمپ کو چین کی طرح روس اور سعودی عرب نے بھی دھوکہ دیا ہے۔

News Code 1899572

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 6 =