حضرت امام رضا (ع) کے حکمت و دانش کے خزانہ سے اپنے اور غیر سبھی فیض یاب ہوتے تھے

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے حضرت امام علی رضا علیہ السلام کی ولادت با سعادت پر تمام محبان اہلبیت (ع) کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ آپ کے دور حیات میں علم و فضل، زہد وتقویٰ کے اعتبار سے کوئی آپ کا ثانی نہیں تھا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایم ڈبلیو ایم کی سائٹ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے فرزند رسول (ص) اور آسمان امامت و ولایت کے آٹھویں درخشاں ستارے حضرت امام علی بن موسی رضا علیہ السلام کی ولادت با سعادت پر تمام محبان اہلبیت (ع) کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ آپ کے دور حیات میں علم و فضل، زہد وتقویٰ کے اعتبار سے کوئی آپ کا ثانی نہیں تھا۔

علامہ راجہ ناصرعباس نے کہا کہ امام علی رضا (ع) حکمت و دانش کا وہ خزینہ تھے جس سے اپنے اور غیر سبھی فیض یاب ہوتے۔اس دور کے بادشاہوں کو کسی ناقابل حل مشکل کے حل کے لیے در امامت کے سوا کوئی دوسرا آسرا نظر نہ آتا۔ امام برحق کا یہ علمی فیض قیامت تک جاری رہے گا۔ امام کے حقیقی پیروکاروں کو اسی تدبر و فراست پر عمل کرنے کی ضرورت ہے جس کا اظہار ہمارے آٹھویں امام (ع)  نے کیا۔

 انہوں نے کہا سیاست دوسروں کو دھوکہ دینے کا نام نہیں بلکہ اپنی قوم کے دفاع اور خوشحالی کے لیے آئمہ اطہار علیہم السلام کے شعار پر عمل کرنے کا نام ہے۔ہم اس سیاسی شعور کی اپنی قوم میں بیداری کے خواہاں ہیں ۔جس کا تقاضا ہم سے ہمارا دین کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر ہم آئمہ اطہار ع کے حقیقی معنوں میں پیروکار بن جائیں تو دنیا و آخرت کی سربلندی ہمارا مقدر بن جائے گی۔مرکزی قیادت کی ہدایت پر ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی،صوبائی اور ضلعی دفاتر میں امام رضا علیہ السلام کی ولادت کی مناسبت سے تقریبات کا بھی اہتمام کیا گیا۔

News Code 1907071

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 2 =