خلیج فارس کے لیے جعلی نام استعمال کرنے پر عراقی سفیر کو طلب کیا گیا، حسین امیر عبداللہیان

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ہم نے عراقی حکام کی جانب سے خلیج فارس کے لیے جعلی نام استعمال کیے جانے کے بعد عراقی سفیر کو وزارت خارجہ میں طلب کیا۔

مہر خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، عراقی حکام کی جانب سے خلیج فارس کے لیے استعمال کیے جانے والے جعلی نام پر تہران میں عراقی سفیر کو ایرانی وزارت خارجہ میں طلب کیا گیا۔

اس سلسلے میں بدھ کے روز ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے کہا کہ اگرچہ عراق کے ساتھ ہمارے اسٹریٹجک، برادرانہ اور گہرے تعلقات ہیں، لیکن ہم نے واضح طور پر اس مسئلے پر اپنے اعتراض کا اظہار کیا ہے۔ عراقی حکام کی جانب سے خلیج فارس کے لیے ایک فرضی نام استعمال کیے جانے کے بعد ہم نے عراقی سفیر کو وزارت خارجہ میں طلب کیا اور 'خلیج فارس' کے لیے درست اور مکمل اصطلاح استعمال کرنے کے حوالے سے ایران کی عظیم قوم کی حساسیت کو ظاہر کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ عراقی وزیر اعظم محمد شیاع السوڈانی نے حال ہی میں انٹرنیٹ پر شائع ہونے والے ایک بیان میں اس مسئلے کی تصحیح کی ہے۔

اس سے قبل پیر کے روز ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی نے اپنی ہفتہ وار پریس بریفنگ میں عراق کی جانب سے خلیج فارس کے بجائے فرضی تعبیر کے استعمال پر بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے اس حوالے سے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ خلیج فارس خلیج فارس ہی رہے گا اور اس سلسلے میں کوئی بھی چیز اس تاریخی حقیقت کو کسی بھی طرح تبدیل نہیں کرسکے گی۔

News Code 1914119

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha