میرجاوہ باڈر پر پاکستانی زائرین کی بھیڑ، خصوصی رپورٹ+ویڈیو

باڈر پر ایرانی اہلکاروں، طبی رضاکاروں اور عوامی خدمت گاروں کے ساتھ ساتھ زائرین کی سہولت اور رہنمائی کے لئے اردو زبان رہنما مبلغین اور علمائے کرام بھی موجود ہیں.

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، اربعین پر جانے والے پاکستانی زائرین اس وقت ایران کے دو باڈرز "میرجاوہ اور ریمدان" سے ایران میں داخل ہو رہے ہیں۔ باڈر پر ایرانی اہلکاروں، طبی رضاکاروں اور عوامی خدمت گاروں کے ساتھ ساتھ زائرین کی سہولت اور رہنمائی کے لئے اردو زبان رہنما مبلغین اور علمائے کرام بھی موجود ہیں جو دن رات زائرین کو ضروری معلومات اور رہنمائی فراہم کرنے میں مصروف ہیں۔

 زائرین کرام میر جاوہ سے زاہدان اور ریمدان سے چابہار کے شہروں کا رخ کر رہے ہیں جبکہ وہاں سے مشہد مقدس میں امام رضا علیہ السلام اور قم المقدسہ میں حضرت فاطمہ معصومہ س کی زیارت کے بعد اربعین حسینی میں شرکت کے لئے شلمچہ باڈر سے عراق روانہ ہوں گے لیکن بدقسمتی سے ابھی تک عراقی حکومت نے ایرانیوں کے علاوہ پاکستانی، افغانی اور دیگر ممالک کے زائرین کو ایران سے عراق میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی ہے.

تفصیلات کے مطابق ایرانی حکام ایران میں زائرین کی ٹرانسپوٹیشن کی خصوصی نگرانی کر رہے ہیں تاکہ بس ڈرائیوروں اور دیگر عملے کی جانب سے کوئی ناگوار واقعہ پیش نہ آئے اور زائرین کرام پرسکون ماحول میں اپنا یہ روحانی سفر جاری رکھیں اور ایرانی حکومت اور عوام کی نیک یادوں کے ساتھ آئمہ معصومین علیہم السلام کی بارگاہ میں حاضری دیں۔ اس وقت ریمدان اور میرجاوہ باڈر سے شلمچہ باڈر تک ایرانی عوام پاکستانی زائرین کی خدمت میں مشغول ہیں اور راستے بھر کے مختلف شہروں میں بھی زائرین کی پذیرائی کے لئے موکب لگائے گئے ہیں.

News Code 1912283

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha