افغانستان کے شہر مزار شریف میں شیعہ مسجد میں بم دھماکہ/ 40 افراد شہید100 زخمی

افغانستان کے شہر مزار شریف میں شیعہ مسجد میں وہابی تکفیری دہشت گردوں کے بم دھماکے کے نتیجے میں اب تک 40 روزہ دار نمازی شہید اور 100زخمی ہوگئے ہیں۔ داعش دہشت گرد تنظیم نے حملے کی ذمہ داری قبول کرلی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اخبار کابل ٹائمز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ افغانستان کے شہر مزار شریف میں شیعہ مسجد میں وہابی تکفیری دہشت گردوں کے بم دھماکے کے نتیجے میں اب تک 40 روزہ دار نمازی شہید اور 100 زخمی ہوگئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق مزار شریف میں شیعوں کی سب سے قدیم اور بڑی مسجد سہ دوکان پر وہابی  تکفیری دہشت گردوں نے بم  سے حملہ کردیا ، جس کے نتیجے میں 40 نمازی شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے ہیں۔ مؤمنین نماز ظہر ادا کررہے تھے۔

انفجار در مسجد شیعیان در مزار شریف افغانستان با ۵ شهید و ۶۵ زخمی

مزار شریف میں ابو علی سینا بلخی  اسپتال کے سربراہ غوث الدین انوری کا کہنا ہے کہ اسپتال میں بہت زخمی لائے گئے ہیں جن میں بعض کی حالت تشویش ناک ہے اور شہداء کی تعداد میں اضافہ  کا خدشہ  ہے۔ طالبان سکیورٹی فورسز نے علاقہ کو محاصرے میں لے لیا ہے۔ اس سے قبل افغانستان کے صوبوں ننگر ہار اور قندوز میں بھی دھماکوں کی خبریں موصول ہوئي تھیں۔ ذرائع کے مطابق مزار شریف میں شیعہ مسجد حملے کی ذمہ داری وہابید ہشت گرد تنظیم داعش نے قبول کرلی ہے۔

انفجار در مسجد شیعیان در مزار شریف افغانستان با ۲ شهید و ۲۵ زخمی

News Code 1910583

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha