ایران امریکہ کے جوہری مذاکرات میں واپس آنے کا انتظار نہیں کرے گا، ترجمان وزارت خارجہ ایران

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہنا ہے کہ اس حقیقت کے باوجود کہ ایران جوہری معاہدے کی بحالی اور پابندیوں کے خاتمے پر بات کرتا رہے گا تاہم مذاکرات کے نتائج کا انتظار نہیں کرے گا اور تعلقات کو وسعت دیتا رہے گا۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی نے  کہا کہ ایران نے اپنی خارجہ پالیسی کے اسٹریٹجک اہداف کو عملی جامہ پہنانے اور اپنے خارجہ تعلقات کو وسعت دینے کے لیے متحرک، عقلمندانہ اور متوازن طریقے سے کام کیا ہے اور مذاکراتی عمل پر عمل پیرا ہونے کے باوجود ایران کی جانب سے کسی قسم کی کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جائے گی۔  ایران جوہری معاہدے اور امریکہ کے اس معاہدے کے وعدوں پر واپسی کا انتظار کرے گا۔

کنعانی نے یہ بیان جمعرات کو شنگھائی تعاون تنظیم (SCO) میں ایران کی مستقل رکنیت کی یادداشت پر دستخط انجام پانے کے بعد اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ایک پوسٹ میں جاری کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ صدر کا دورہ ازبکستان اپنے ازبک ہم منصب کی دعوت پر باضابطہ دوطرفہ اجلاس، شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہی اجلاس میں شرکت اور ایران کی مستقل رکنیت کے انتظامات کی یادداشت پر دستخط کرنے کے لئے ہے جو ہمسائیگی کی پالیسی، اجتماعیت اور علاقائی یکجہتی اور کثیرالجہتی کو گہرا کرنے میں مزید ایک اہم اور دیرپا پیش رفت ہے۔

News Code 1912362

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha