پیغمبر اسلام (ص) کی دختر گرامی کا عقد جس سادگی سے ہوا وہ سادگی امت مسلمہ کے لیے قابل تقلید ہے

علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہاکہ سید الانبیاء حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی دختر گرامی کا عقد جس سادگی سے ہوا وہ سادگی امت مسلمہ کے لیے قابل تقلید ہے۔

مہر نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری تنظیم علامہ مقصود علی ڈومکی نے یکم ذوالحجہ حضرت امیر المومنین علی ابن ابی طالب علیہ السلام اور سیدہ کائنات حضرت بی بی فاطمہ زہراء سلام اللہ علیہا کے عقد مبارک کی تاریخ پر پوری امت مسلمہ کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ تاریخ انسانی کا بے مثل جوڑا جن کے گھرانے نے عالم انسانیت کی رہبری کی۔ سید الانبیاء حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی دختر گرامی کا عقد جس سادگی سے ہوا وہ سادگی امت مسلمہ کے لیے قابل تقلید ہے۔ اولاد کی تربیت میں سیدہ فاطمہ زہراء سلام اللہ علیہا اور مولا علی علیہ السّلام کی سیرت طیبہ نمونہ عمل ہے۔ جب دین خدا پر مشکل وقت آیا تو اولاد فاطمہ زہراء سلام اللہ علیہا نے بے مثال قربانی دے کر دین کی لاج رکھ لی۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے معاشرے میں جہیز کی لعنت اور شادی کی مہنگی رسومات کے سبب نوجوانوں کی بروقت شادی اور نکاح نہیں ہو پاتا۔ ہمیں چاہئے کہ نوجوانوں کی بروقت شادی کا اہتمام کریں اس سلسلے میں اھل خیر حضرات کو آگے آنا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ اولاد کی تربیت کے رہنما اصول ہمیں اھل بیت علیھم السلام سے سیکھنے چاہئیں۔ خانوادہ اھل بیت میں جن قدسی صفات ھستیوں نے تربیت پائی وہ انسانی کمالات کا مجموعہ تھے۔ شجاعت فصاحت۔ قناعت سخاوت حلم علم و دیگر اعلیٰ انسانی صفات آل رسول کی ذات میں جمع ہوئیں یہ تربیت فاطمہ زہراء سلام اللہ علیہا کا اعجاز تھا کہ ان کے دامن عصمت میں تربیت پانے والے قدسی صفات ھستیوں کی نظیر تاریخ انسانی نے نہیں دیکھی۔

News Code 1911410

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha