بنگلہ دیش میں ہوٹل پر حملے میں ملوث دہشت گرد بنگلہ دیشی تھے

بنگلہ دیش کے وزیر داخلہ نے کہا ہے کہ ڈھاکہ کے سفارتی علاقے میں ہوٹل پر حملے میں ملوث دہشت گرد مقامی تھے جن کا تعلق بنگلل دیش میں موجود وہابی دہشت گرد تنظیم داعش سے ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بنگلہ دیش کے وزیر داخلہ اسد الزمان خان  نے کہا ہے کہ ڈھاکہ  کے سفارتی علاقے میں ہوٹل پر حملے میں ملوث دہشت گرد مقامی تھے جن کا تعلق بنگلل دیش میں موجود وہابی دہشت گرد تنظیم داعش سے ہے۔ اطلاعات کے مطابق بنگلہ دیش کے وزیرداخلہ اسد الزمان خان کا کہنا تھا  کہ ڈھاکہ کے سفارتی علاقے میں ریسٹورنٹ پر حملے میں ملوث دہشت مقامی تھے جن کا تعلق داعش سے وابستہ وہابی دہشت گرد اور کالعدم  تنظیم جمعیت المجاہدین بنگلہ دیش سے ہے۔

بنگلہ دیشی وزیر داخلہ نے کہا کہ کالعدم جمعیت المجاہدین بنگلہ دیش نامی تنظیم پر 10 سال قبل پابندی لگائی جاچکی ہے جب کہ یہی گروپ گزشتہ ڈیرھ سال سے ملک میں ہونے والی دیگر دہشت گردانہ  کارروائیوں میں ملوث رہا ہے۔واضح رہے کہ جمعہ کو بنگلہ  دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ کے سفارتی علاقے میں واقع ریسٹورنٹ پر حملے کے نتیجے میں 20 غیر ملکی ہلاک ہوگئے تھے جب کہ فورسز کے آپریشن میں 6 حملہ آوربھی مارے گئے تھے جبکہ ایک دہشت گرد کو زندہ گرفتار کرلیا گیا تھا۔

News Code 1865236

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha