سعودی حکام پرمنی کے المناک حادثے کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے

رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے منی کے المناک حادثے کی ذمہ داری سعودی حکام پر عائد کرتے ہوئے فرمایا ہے کہ سعودی حکام کو غلط،جھوٹا ،بے بنیاد اور شرانگیز پروپیگنڈہ کرنے کے بجائے امت مسلمہ سے معذرت اور معافی مانگنی چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے آج صبح فقہ کے درس خارج میں منی کے المناک حادثے کی ذمہ داری سعودی حکام پر عائد کرتے ہوئے فرمایا ہے کہ سعودی حکام کو غلط،جھوٹا ،بے بنیاد اور شرانگیز پروپیگنڈہ کرنے کے بجائے امت مسلمہ سے معذرت اور معافی مانگنی چاہیے۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: منی کے المناک واقعہ کے بارے میں عالم اسلام کے لئے بہت سے سوالات پیدا ہوئے ہیں اور سعودی حکام کو چاہیے کہ وہ غلط اور ے بنیاد پروپیگنڈہ کرنے کے بجائے عالم اسلام سے معذرت طلب کرنی چاہیے اور سوگوار خاندانوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرنا چاہیے ۔رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: سعودی حکام نے ناقص کارکردگی ، غفلت اور کوتاہی کی بنا پر عید الاضحی کو عالم اسلام کے لئے عزا میں تبدیل کردیا۔ واضح رہے کہ منی کےمقام پر موجود عینی شاہدین کے مطابق منی کا المناک  اور دردناک حادثہ اس وقت پیش آیا جب سعودی عرب کے وزیر دفاع اور سعودی  بادشاہ کے بیٹے محمد بن سلمان منی پہنچے اور اس کی سکیورٹی کے لئے سڑک نمبر 204 اور 215 کو بند کردیا گیا ۔ ذرائع کے مطابق منی میں سعودی عرب کے حکام کی نااہلی ،بدنظمی ،غفلت اور عدم توجہ کی بنا پر المناک حادثہ رونما ہوا جس میں 1500 سے زائد افراد شہید اور 2000 سے زائد زخمی اور سیکڑوں لاپتہ ہوگئے ہیں۔

News Code 1858442

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 1 =