مسلمانوں میں تفرقے کی بات یہود و نصارٰی کے اسلام دشمن عزائم کو تقویت دینے کے مترادف ہے

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے چیئرمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے روز عاشورا کے پیغام میں کہا ہے کہ باطل قوتوں کے خلاف نواسہ رسول ﷺحضرت امام حسین ؑکا قیام جرات و استقامت کا وہ باب ہے جسے تاقیامت یاد رکھا جائے گا۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے چیئرمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے روز عاشورا کے پیغام میں کہا ہے کہ باطل قوتوں کے خلاف نواسہ رسول ﷺحضرت امام حسین ؑکا قیام جرات و استقامت کا وہ باب ہے جسے تاقیامت یاد رکھا جائے گا۔حق وباطل کے اس معرکے میں امام عالی مقامؑ نے گنے چنے افراد کے ساتھ میدان میں نکل کر عالم بشریت کو یہ درس دیا کہ افرادی قوت یا جنگی سازو سامان کی کمی ظالم حکمرانوں کے خلاف خاموش رہنے کا جواز نہیں بن سکتی۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت بھی دنیا میں حق و باطل کے دو گروہ موجود ہیں۔مظلوم کے ساتھ کھڑا ہونا انبیاءکرام و آئمہ اطہار ؑ کا شعار ہے۔ہم نے مظلوم کا ساتھ دینا ہے۔مستکبرین و غاصبین کے مقابلے میں ان لوگوں کے ساتھ کھڑے ہونا ہی اخلاقی و شرعی تقاضا اور بشری ضرورت ہے جو جیو اور جینے دو کی پالیسی پر گامزن ہے۔جو مظلوم و بے گناہ لوگوں سے ان کی زندگیاں چھین رہے ہیں ہم نے ان کا مقابلہ کرنا ہے ان کا ساتھ دینے والوں کے خلاف آواز بلند کرنی ہے۔یہی لوگ وقت کے یزید ہیں۔ امام حسین علیہ السلام کے یہ الفاظ کہ مجھ جیسا اس(یزید) جیسے کی بیعت نہیں کر سکتا تمام حق پرستوں کے لیے قیامت تک کا درس ہے۔ خود کو صرف حسینی کہنے سے حق ادا نہیں ہوگا بلکہ امام عالی مقام کے کردار و عمل کی پیروی کر کے خود کو حسینی ثابت کرنا ہو گا۔انہوں نے کہا کہ یہ وقت امت مسلمہ کے اتحاد و اخوت کا ہے۔مسلمانوں میں تفرقے کی بات یہود و نصارٰی کے اسلام دشمن عزائم کو تقویت دینے کے مترادف ہے۔مسلمانوں کے تمام مکاتب فکر تاریخی و علمی اختلافات پر الجھنے کی بجائے مشترکات پر باہم رہیں تاکہ باطل قوتوں کو ناکام بنایا جا سکے۔

_____________________________

ہمیں سوشل میڈیا پر جوائن کریں

 WhatsApp group

Facebook

instagram

twitter

News Code 1911917

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha