باہمی معاہدوں کو عملی جامہ پہنانے کے لئے مشترکہ تعاون کمیشن کو فعال رہنا چاہیے

رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے ترکمنستان کے صدر اور اس کے ہمراہ وفد کے ساتھ ملاقات میں فرمایا: دونوں ممالک کے درمیان معاہدوں کو حتمی شکل دینےاورعملی جامہ پہنانے کے لئے مشترکہ تعاون کمیشن کو فعال رہنا چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے ترکمنستان کے صدر اور اس کے ہمراہ وفد کے ساتھ ملاقات میں فرمایا: دونوں ممالک کے درمیان معاہدوں کو حتمی شکل دینےاورعملی جامہ پہنانے کے لئے مشترکہ تعاون کمیشن کو فعال رہنا چاہیے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: اسلامی جمہوریہ ایران کی پالیسی ہمسایہ اور دوست ممالک کے ساتھ تعلقات کو فروغ دینے پر استوار ہے اور یہ پالیسی صحیح اور درست ہے۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی نے دونوں ممالک کے سیاسی اور اقتصادی تعاون میں موجودہ موانع کو دور کرنے کے لئے پختہ عزم کی طرف اشارہ کرتے ہوئےفرمایا: ایران اور ترکمنستان کے باہمی تعلقات کے فروغ میں بعض طاقتیں مخالف ہیں لیکن ہمیں ملکی مفادات کی روشنی میں ان رکاوٹوں کو برطرف کرنا چاہیے۔

 رہبر معظم انقلاب اسلامی نے دونوں ممالک کے مشترکہ کمیشنوں کو فعال کردار ادا کرنے پر تاکید کرتے ہوئے فرمایا: باہمی معاہدوں کو عملی جامہ پہنانے کے لئے مشترکہ تعاون کمیشنوں کو سنجیدگي کے ساتھ کام کرنا چاہیے۔

اس ملاقات میں صدر رئيسی بھی موجود تھے۔ ترکمنستان کے صدر بردی محمد اوف نے دورہ ایران پر اپنی خوشی اور مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ترکمنستان کی پالیسی ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات کو فروغ دینے پر استوار ہے اور ہم ایران کے ساتھ تعلقات کو مطلوبہ سطح تک پہنچانے کی تلاش کررہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایران اور ترکمنستان کے باہمی تعلقات مختلف شعبوں میں فروغ پارہے ہیں جن میں گیس ، بجلی اور حمل و نقل کے شعبے بھی شامل ہیں۔ ترکمنستان کے صدر نے ایران اور ترکمنستان کے 30 سالہ تعلقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم ایران کی حمایت پر جنابعالی ، ایرانی حکومت اور عوام کے شکرگزار ہیں۔

News Code 1911213

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha