جمال خاشقجی کی زندگی کے آخری لمحات کی آڈیو جاری

سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے حکم پر ترکی میں سعودی عرب کے قونصلخانہ میں بہیمانہ طور پر قتل کئے جانے والے سعودی صحافی جمال خاشقجی کی زندگی کے آخری لمحات میں ریکارڈ کی آڈیو جاری کردی گئي ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے حکم پر ترکی میں سعودی عرب کے قونصلخانہ میں بہیمانہ طور پر قتل کئے جانے والے سعودی صحافی جمال خاشقجی کی زندگی کے آخری لمحات میں ریکارڈ  کی آڈیو جاری کردی گئي ہے۔ اطلاعات کے مطابق ترک اخبارکی جانب سے سعودی صحافی جمال خاشقجی کی زندگی کی آخری لمحات میں ریکارڈ کی گئی مبینہ ریکارڈنگ کی تفصیلات جاری کی گئی ہے جس میں صحافی کے آخری الفاظ سے متعلق معلومات شامل ہیں۔

رپورٹ کے مطابق صحافی جمال خاشقجی کو کہا گیا تھا کہ انہیں انٹرپول کے حکم کے مطابق انھیں دارالحکومت ریاض واپس جانا ہوگا، جس پران کی جانب سے انکارکردیا گیا تھا۔ رپورٹ کے مطابق صحافی کے انکارکے بعد انہیں نشہ آورچیزدی گئی تھی۔

ترک حکام کے دعوے کے مطابق خاشقجی نے مبینہ طور پر اپنے آخری الفاظ میں اپنے قاتلوں کو ان کا منہ بند نہ کرنے کی درخواست کی تھی کیونکہ انہیں دمے کا مرض لاحق تھا تاہم وہ اس کے بعد اپنے ہوش میں نہیں رہے جب کہ ریکارڈنگ میں مبینہ طورپرہاتھا پائی کی آوازیں بھی موجود ہیں۔

واضح رہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کو گزشتہ سال 2 اکتوبرکو ترکی کے شہر استنبول میں سعودی عرب کے قونصلخانہ میں بہیمانہ طور پر قتل کردیا گیا، پہلے سعودی رعب نے جھوٹ کا سہارا لیکر قاشقجی کے بہیمانہ قتل سے لا تعلقی کا اظءار کیا تاہم عالمی دباؤ کے بعد  سعودی عرب نے جمال خاشقجی کی استنبول کے سعودی قونصل خانے میں قتل کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے خاشقجی کے قتل میں ملوث سعودی اہلکاروں کو گرفتار کرنے کا ڈھونگ رچایا ۔ خاشقجی کے قتل میں سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے مشیر خاص بھی شامل ہیں جس کے بعد اس بات کا یقین ہوگیا ہے خاشقجی کو سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے حکم پر قتل کیا گیا۔

News Code 1893663

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =