امریکہ اپنی ناکامی کی بھڑاس نکالنے کے لیے افغانستان میں امن قائم نہیں ہونے دے رہا

روسی حکومت کے نمائندے برائے افغانستان نے کہا کہ امریکہ افغانستان میں طالبان کے مخالفین کی خفیہ حمایت کر رہا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رشیا ٹوڈے سے نقل کیا ہے کہ روسی حکومت کے نمائندہ برائے امور افغانستان ضمیر کابلوف نے کہا ہے کہ امریکہ خفیہ طور پر افغانستان کے موجودہ حکام کے مخالفین کے ساتھ گٹھ جوڑ کے لیے کوششیں کر رہا ہے۔

افغانستان کے خصوصی امور میں روسی حکومت کے نمائندے ضمیر کابلوف نے جمعہ کو اعلان کیا کہ ان کے ملک کے پاس اس بات کے شواہد موجود ہیں کہ امریکہ افغانستان میں موجودہ حکام کے مخالفین کے ساتھ ایک مواصلاتی چینل قائم کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔ دوسری جانب روسی شواہد داعش کے دہشت گردوں کو واشنگٹن حکومت کی خفیہ حمایت کی نشاندہی کرتے ہیں۔روسی حکومت کے نمائندے نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ افغانستان میں نقصان پہنچانے کے لیے ایسے اقدامات کر رہا ہے تا کہ اپنی ذلت آمیز سیاسی شکست کا بدلہ لے سکے۔

کابلوف نے کہا کہ امریکی حکومت ہر ممکن کوشش کر رہی ہے تاکہ افغانستان کو امن دیکھنا نصیب نہ ہو اور یہاں تک کہ اس ملک کے حالات مزید خراب ہوتے چلے جائیں۔ اس مقصد کے لیے وہ طالبان کے مخالف مسلح گروپوں سے رابطہ کر رہا ہے۔

افغانستان کے بارے میں روسی صدر کے خصوصی نمائندے نے اس سے پہلے تاکید کی تھی کہ یہ حقیقت کہ امریکی اب افغانستان میں اپنی فوجی موجودگی کے ساتھ نہیں رہے اور ان کی بدعنوان کٹھ پتلی حکومت بھی برسر اقتدار نہیں ہے، مثبت چیزوں میں سے ایک ہے۔

News Code 1914289

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha