امریکہ کابل میں طالبان کے اثرورسوخ بڑھنے پر حملہ کرسکتا ہے

امریکی اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکہ کابل میں طالبان کے اثرورسوخ بڑھنے پر بمبار ڈرون یا جنگی طیاروں سے حملہ آور ہوسکتا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے نیویارک ٹائمز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ کابل میں طالبان کے اثرورسوخ بڑھنے پر بمبار ڈرون یا جنگی طیاروں سے حملہ آور ہوسکتا ہےنیویارک ٹائمز کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ افغانستان میں جاری بحران اور طالبان کے اثرورسوخ کے پیش نظر امریکہ افغان دارالحکومت کابل میں اپنے بمبار ڈرون اور جنگی طیارے بھیج سکتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق امریکی حکام نے یہ بھی کہا ہے کہ افغانستان میں فوجی اڈے چھوڑنے کے بعد امریکہ کو طویل عرصے تک طالبان کے حملے روکنے میں مشکلات کا سامنا ہوگا، اس کے لیے خلیج فارس  میں قائم امریکی فوجی اڈے کردار ادا کرسکتے ہیں۔

اخبار کے مطابق امریکی حکام نے انہیں بتایا ہے کہ امریکا مستقبل میں اس وقت افغانستان میں انسداد دہشت گردی آپریشن کے تحت حملے کرے گا جب اس سے امریکہ کو براہ راست کوئی خطرہ محسوس ہوگا۔

ذرائع کے مطابق نیویارک ٹائمز کی رپورٹ ایک ایسے وقت میں  شائ‏ع ہوئی ہے جب امریکہ اور اس کے نیٹو اتحاد کی افواج کا افغانستان سے انخلا ہو رہا ہے۔ افواج کے انخلا کی آخری تاریخ 11 ستمبر ہے ۔

News Code 1906886

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 6 =