امریکہ میں مظاہرے عوامی تحریک میں تبدیل ہوگئے ہیں

امریکہ میں سیاہ فام شخص جارج فلوئیڈ کے قتل کے خلاف ہونے والے مظاہرے ایک تحریک میں تبدیل ہونا شروع ہوگئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ میں سیاہ فام شخص جارج فلوئیڈ کے قتل کے خلاف ہونے والے مظاہرے ایک تحریک میں تبدیل ہونا شروع ہوگئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق نیو یارک، کیلی فورنیا اور فلاڈیلفیا سمیت مختلف ریاستوں میں مظاہرے کیے گئے جبکہ واشنگٹن میں حکام کو فوج طلب کرنا پڑگئی۔  امریکہ میں سیاہ فام شہری جارج فلوئیڈ کے قتل اور نسل پرستی کے خلاف وائٹ ہاؤس، کیپیٹل ہل اور لنکنز میموریل کے سامنے مظاہرے کیے گئے۔

وائٹ ہاؤس کے اطراف ڈیڑھ کلومیٹر کا احاطہ رکاوٹیں لگا کر بند کر دیا گیا ہے اور سینکڑوں فوجی تعینات کر دیئے گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق امریکی عوام اب قاتلوں کی سزا کا مطالبہ نہیں کررہے بلکہ امریکی نظام کی تبدیلی کا مطالبہ کررہے ہیں لہذا جارج فلائیڈ کے قتل سے شروع ہونے والے عوامی مظاہرے اب ایک تحریک میں بدیل ہوگئے ہیں۔

News Code 1900748

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 7 =