امریکی سینیٹ میں سعودی حکومت کے خلاف مقدمہ قائم کرنے کے لیے قانون منظور

امریکی سینیٹ نے نائن الیون حملوں میں ملوث ہونے کے بارے میں سعودی حکومت کے خلاف مقدمے کے لیے قانون کی منظوری دے دی جس کے تحت سانحہ کے متاثرہ خاندان سعودی حکومت پر مقدمہ دائرکرسکیں گے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی سینیٹ نے نائن الیون  حملوں میں ملوث ہونے کے بارے میں  سعودی حکومت کے خلاف مقدمے کے لیے قانون کی منظوری دے دی جس کے تحت سانحہ کے متاثرہ خاندان سعودی حکومت پر مقدمہ  دائرکرسکیں گے۔

اطلاعات کے مطابق سعودی عرب کی جانب سے سرمایہ نکالنے کی دھمکی دینے کے باوجود امریکی سینیٹ نے نائن الیون حملوں کے متاثرہ خاندانوں کو سعودی حکومت پر مقدمہ کرنے کے قانون کی منظوری دے دی جس کے تحت اب سانحہ کے متاثرین امریکہ کی عدالتوں میں سعودی حکومت کے خلاف مقدمہ دائر کرسکیں گے۔ 

واضح رہے کہ سعودی عرب کی جانب سے خبر دار کیا گیا تھا کہ اگر امریکہ نے نائن الیون کے حملوں کا ذمہ دار قرار دینے کے حوالے سے کوئی قانون منظور کیا تو امریکہ میں موجود اپنے اربوں ڈالر کے اثاثوں کو فروخت کردیں گے۔ نائن الیون تحقیقاتی کمیشن کی رپورٹ کے مطابق 11 ستمبر کے حملوں میں سعودی عرب کی حکومت کے اہلکار بھی ملوث ہیں جنکا حملوں ميںم لوث دہشت گردوں کے ساتھ قریبی رابطہ تھا اور جنھوں نے دہشت گردوں کو سہولیات بھی فراہم کیں۔

News Code 1864084

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 5 =