سیلاب سے پاکستانی صوبہ سندھ کے تعلیمی اداروں کو 100 ارب کا نقصان ہوا

موسلا دھار بارشوں اور سیلابی صورتحال کے باعث سندھ کے سرکاری تعلیمی اداروں کو 100 ارب روپے کا نقصان ہوا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی میڈیا سے نقل کیاہےکہ پاکستانی صوبہ سندھ میں مسلسل بارشوں اور سیلاب نے سرکاری تعلیمی اداروں کو اربوں روپے کا نقصان ہوا۔

وزیر تعلیم سردار شاہ نے کہا کہ محکمہ تعلیم کے حالیہ رپورٹ کے مطابق 12 ہزار 442 سرکاری اسکولوں کی عمارتوں کو نقصان پہنچا جس میں صوبہ بھر میں 4 ہزار 869 اسکول مکمل تباہ ہو چکے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ 7 ہزار 573 اسکولوں کی عمارتوں کے چند حصے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں، اور 20 لاکھ سے زاٸد بچوں کی تعلیم کو نقصان پہنچا ہے۔ سردار شاہ کا کہنا تھا کہ تدریس کے عمل کو مکمل بحالی کے لٸے تین سال لگیں گے جب تک 15 ہزار ٹینٹ اسکول قاٸم کر کے ان میں بچوں کو پڑھانا ہوگا۔

وزیرتعلم سندھ نے کہا کہ  100 ارب کے نقصان کا ازالہ کرنے کے لیے فل فور 75 ارب کی ضرورت ہے تا کہ بچوں کی تعلیم متاثر نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی تنظیموں سے مدد مانگی ہے کہ وسائل نہیں ہیں مالی مدد کی جائے۔

News Code 1912709

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha