قرقیزستان کے صدر الیکشن میں دھاندلی کے الزامات کے بعد عہدہ سے مستعفی ہوگئے

قرقیزستان کے صدر نے الیکشن میں دھاندلی کے الزامات اور حکومت مخالف مظاہروں کے بعد استعفی دیدیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اسپوٹنک کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ وسطی ایشیا کے ملک قرقیزستان کے صدر سورونبائی جین بے کوف نے الیکشن میں دھاندلی کے الزامات اور حکومت مخالف مظاہروں کے بعد استعفی دیدیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق صدر بے کوف نے مستعفی ہوتے ہوئے کہا کہ وہ سکیورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان تصادم اور خونریزی سے بچنے کے لیے اپنے عہدے کی قربانی دے رہے ہیں۔

صدر بے کوف نے کہا کہ اگر مظاہرین نے ایوان صدر تک مارچ کیا تو خونریزی ہوسکتی ہے، کیونکہ فوج اور پولیس سرکاری رہائش گاہ کو بچانے کے لیے ہتھیار استعمال کریں گی جس کے نتیجے میں خون بہے گا اور میں ایسا نہیں چاہتا، اسی لیے میں دونوں فریقین پر اشتعال انگیزی سے باز رہنے کےلیے زور دیتا ہوں، میں ملکی تاریخ میں ایسا صدر کہلوانا نہیں چاہتا جس نے اپنے ہی شہریوں کا خون بہایا ہو۔

قرقیزستان میں 4 اکتوبر کو ہونے والے متنازع پارلیمانی الیکشن کے بعد سے سیاسی جماعتوں کا احتجاج جاری ہے جو صدر بے کوف سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کررہی تھی اور بالآخر ان کا احتجاج رنگ لے آیا۔

News Code 1903449

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 2 =