خاشقجی کے اہلخانہ نے خاشقجی کے قاتلوں کو معاف کردیا

سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے حکم پر دو برس قبل ترکی کے شہر استنبول میں سعودی عرب کے قونصلخانہ میں سعودی صحافی جمال خاشقجی کو بہیمانہ طور پر قتل کردیا گیا تھا، جمال خاشقجی کے بیٹوں نے اب باپ کے قاتلوں کو معاف کر دیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رشیا ٹوڈے کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان  کے حکم پر دو برس قبل  ترکی کے شہر استنبول میں سعودی عرب کے قونصلخانہ میں سعودی صحافی جمال خاشقجی کو بہیمانہ طور پر قتل کردیا گیا تھا، جمال خاشقجی  کے  بیٹوں نے اب باپ کے قاتلوں کو معاف کر دیا ہے۔

سعودی عرب میں مقیم جمال خاشقجی کے بیٹوں صالح اور عبداللہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ  عید الفطر اور رمضان کی مناسبت سے  انھوں  نے اپنے والد کے قاتلوں کو معاف کر دیا ہے۔ سعودی عرب کی عدالت نے خاشقجی کے قتل میں ملوث ایک شخص کو پھانسی اور تین کو 24 24 سال کی قید کی سزا سناغي تھی یہ سبھی افراد سعودی عرب کے ولیعہد کے قریبی ساتھیوں ميں شمار ہوتے ہیں۔

واضح رہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کو استنبول میں واقع سعودی قونصلیٹ میں 2 برس قبل قتل کیا گیا تھا  ، خشقجی کا شمار سعودی عرب  حکومت کے ناقدین میں ہوتا تھا۔ جمال خاشقجی کے دونوں بیٹے سعودی عرب میں ہی مقیم ہیں۔  عرب ذرائع اور مبصرین کے مطابق خاشقجی کے قتل میں سعودی رعب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے ملوث ہونے کے بارے میں ٹھوس شواہد موجود ہیں اور یہ شواہد ترک حکام کے پاس بھی موجود ہیں کہ سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے حکم اور اس کی سرپرستی میں خاشقجی کو قتل کیا گیا اور اس کی لاش کا آج تک پتہ نہیں چل سکا۔

News Code 1900357

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 5 =