انسانی حقوق کے رہنما کا امریکہ سے سیاہ فاموں کی گردنوں سے گھٹنے اٹھانے کا مطالبہ

انسانی حقوق کے رہنما ال شارپٹن نے جارج فلائیڈ کی یادگاری تقریب سے خطاب میں امریکہ سے سیاہ فاموں کی گردنوں سے گھٹنے اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ انسانی حقوق کے رہنما ال شارپٹن نے جارج فلائیڈ کی یادگاری تقریب سے خطاب میں امریکہ سے سیاہ فاموں کی گردنوں سے گھٹنے اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔ امریکہ میں سفیدفام پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں قتل سیاہ فام شہری کی میت مینیاپلیس کی نارتھ سینٹرل یونیورسٹی لائی گئی تواحترام میں پولیس اہلکاروں نے بھی گھٹنے ٹیک دیئے۔

تقریب سے ال شارپٹن نے انتہائی جذباتی خطاب کیا اور کہا کہ پولیس اہلکار نے گھٹنا صرف جارج فلائیڈ کی گردن پر نہیں بلکہ تمام سیاہ فاموں کی گردن پر رکھا تھا، انہوں نے کہا کہ تبدیلی آنے تک احتجاج جاری رہے گا۔

یادگاری تقریب میں جیسی جیکسن،سینیٹر ایمی کلوبوچار اور گورنر ٹم والز سمیت اہم شخصیات نے شرکت کی۔

ادھر جارج  فلائیڈ کے قتل میں ملوث تینوں پولیس اہلکاروں نے ضمانت کرالی ہے، جج نے تینوں ملزمان کی ساڑھے 7 لاکھ ڈالر فی کس کے لحاظ سے ضمانت منظور کی ہے۔

امریکی اٹارنی جنرل کے مطابق یہ ناقابل تردید حقیقت ہے کہ زیادہ تر افریقن امریکنز کا ملک کے نظام انصاف پر اعتماد ہی نہیں۔

جارج فلائیڈ کی یاد میں تقریب واشنگٹن میں بھی ہوئی جس میں ڈیموکریٹ سینیٹرز نے گھٹنے ٹیک کر مقتول کو خراج عقیدت پیش کیا۔ واضح رہے کہ جارج فلائیڈ کے قتل کے کے بعد ہونے والے احتجاج میں کم سے کم 20 افراد ہلاک ، سیکڑوں زخمی اور ہوگئے تھے۔

News Code 1900689

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 13 =