امریکہ کے ساتھ عرب ممالک کا رابطہ ماضی کی طرح نہیں رہےگا

سعودی عرب کے سابق بادشاہ شاہ عبداللہ کے مشیر کا کہنا ہے کہ عرب ممالک میں نئی بہار آئندہ پانچ سال تک آئے گی اور امریکہ کے ساتھ عرب ممالک کے نئے رہنماؤں کا رابطہ ماضی کی طرح نہیں رہےگا۔

مہر خبررساں ایجنسی کے بین الاقوامی امو ر کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو میں سعودی عرب کے سابق بادشاہ  ملک عبداللہ کے مشیرپروفیسر حسین عسکری کا کہنا ہے کہ عرب ممالک میں نئی بہار آئندہ پانچ سال تک آئے گی اور امریکہ کے ساتھ عرب ممالک کے نئے رہنماؤں کا رابطہ ماضی کی طرح نہیں رہےگا۔ حسین عسکری کو سعودی عرب کے اقتصاد کا معمار بھی کہا جاتا ہے ۔ حسین عسکری امریکی یونیورسٹی جارج واشنگٹن میں عالمی تجارت اور بین الاقوامی امور کے استاد ہیں۔

سعودی عرب کے سابق بادشاہ کے مشیر نے جولان کو اسرائیل کے حوالے کرنے کے امریکی صدر ٹرمپ کے فیصلے کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ امریکی صدر نے اسرائیلی وزیر اعظم کی حمایت میں یہ قدم اٹھایا ہے نیتن یاہو پر کئی الزامات ہیں لہذا اسے مزید حمایت کی ضرورت ہے اور امریکی صدر اس کی بھر پور حمایت کررہے ہیں۔ امریکی صدر کے فیصلے کی ایک وجہ امریکی صدر کے داماد کوشنر بھی ہیں کیونکہ کوشنر بھی اسرائیلی وزير اعظم نیتن یاہو کے بہت  قریب ہوگئے ہیں۔

حسین عسکری نے امریکی صدر کےجولان کو اسرائیل کے حوالے کرنے کے فیصلے کے بارے میں عرب ممالک سعودی عرب، مصر، متحدہ عرب امارات، اردن اور خلیج فارس تعاون کونسل کی بے بسی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ تمام عرب ممالک کی طاقت و قدرت  امریکی فوجی حمایت اور امریکی انٹیلیجنس اطلاعات پر منحصر ہے اور عرب حکمراں  اپنے اقتدار کو بچانے کی فکر میں ہیں۔ انھوں نے کہا کہ امریکہ نوازعرب حکمرانوں کو اپنے عوام کی شورش کا خطرہ بھی ہے جسے وہ امریکہ کی ہمراہی کے ذریعہ دبا سکتے ہیں ۔ نئی عربی بہار آئندہ 5 سال تک عرب ممالک میں رونما ہوگی ، جس میں عرب عوام کھل کر اسرائیل کے خلاف سامنے آجائیں گے۔ اور امریکہ کے ساتھ عرب حکمرانوں کے  رابطے بھی ماضی کی طرح نہیں رہیں گے جس کے نتیجے میں عرب ممالک میں حکمرانوں کی تبدیلی کے قوی امکان ہیں۔ عسکری نے کہا کہ سعودی عرب کے صحافی خاشقجی کے بہیمانہ قتل کے بعد سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کو عالمی سطح پر شدید تنہائی کا سامنا ہے اور وہ امریکہ کی حمایت کے بغیر مسند قدرت پر نہیں بیٹھ سکتے البتہ امریکہ کے حامی عرب حکمراں کی تبدیلی یقینی ہے اور امریکہ کے ساتھ عرب ممالک کے رابطے ماضی کی طرح نہیں رہیں گے۔

News Code 1889433

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 1 =