سعودیہ میں وہابی ازم کا خاتمہ/ مسلح افواج میں خواتین کو بھرتی کرنے کا فیصلہ

سعودی عرب نے مسلح افواج میں پہلی مرتبہ خواتین اہلکاروں کو بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا ہے جسے سعودی عرب میں رونما ہونے والی تبدیلیوں سے وہابی ازم ختم اور مغربی تہذيب شروع ہوجائےگی ۔

مہر خبررساں ایجنسی نے العربیہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب نے مسلح افواج میں پہلی مرتبہ خواتین اہلکاروں کو بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا ہے جسے سعودی عرب میں رونما ہونے والی تبدیلیوں سے وہابی ازم  ختم اور مغربی تہذيب شروع ہوجائےگی ۔ سعودی وزارت دفاع کے مطابق سعودی خواتین کو سپاہی، اسٹاف سارجنٹ، فرسٹ سارجنٹ، میجر اور دیگر عہدوں پر بھرتی کیا جائے گا۔

سعودی عرب کی افواج میں شامل ہونے کے لئے خواتین کو درخواستیں آن لائن جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ اس سے پہلے بھی سعودی حکومت کی جانب سے خواتین پر عائد مختلف پابندیوں کو ہٹایا گیا ہے، جن میں سفری، گاڑی چلانا اور ہوٹل میں اکیلے قیام کرنے سے متعلق اجازت دی گئی ہے۔ سعودی عرب نے نامحرم لڑکی اور لڑکے کو ایک کمرے میں سونے کی اجازت بھی دیدی ہے۔ عرب ذرائع کے مطابق سعودی عرب ملک میں وہابی ازم کو ختم کرکے مغربی تہذیب کو فروغ دے رہا ہے۔

News Code 1894418

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 0 =