کشمیر کے سابق وزیر اعلی کی مسئلہ کشمیر کے بارے میں گفتگو پر تاکید

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے رہنما عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ اگر طالبان کے ساتھ مذاکرات ہوسکتے ہیں تو جموں و کشمیر میں اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ بھی بات چیت بھی ہونی چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے کشمیر ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے رہنما عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ اگر طالبان کے ساتھ مذاکرات ہوسکتے ہیں تو جموں و کشمیر میں اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ بھی بات چیت  بھی ہونی چاہیے۔عمر عبداللہ کا یہ بیان روس میں افغان امن مذاکرات میں بھارت کی جانب سے "غیر سرکاری " طور پر شرکت کی تصدیق کے بعد سامنے آیا ہے۔ عمر عبداللہ نے کہا کہ جموں و کشمیر میں اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مذاکرات کی ضرورت ہے۔

عمر عبداللہ نے کہا کہ اگر مودی حکومت کے لیے طالبان کی موجودگی والے اجلاس میں "غیر سرکاری " شرکت قابل قبول ہے تو جموں و کشمیر میں خود مختاری کی بحالی کے لیے " غیر سرکاری "  مذاکرات کیوں نہیں ہوسکتے۔

News Code 1885510

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 6 =