سعودی ولی عہد کا امریکی صدر کے داماد کو اپنی جیب میں رکھنے کا دعوی

سعودی عرب کے امریکہ اور شیطان نواز ولی عہد محمد بن سلمان کی جانب سے یہ دعویٰ سامنے آیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سینئر مشیر اور داماد جیرڈ کشنر ان کی جیب میں ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق الجزیرہ نے دی انٹرسیپٹ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب کے امریکہ اور شیطان نواز ولی عہد محمد بن سلمان کی جانب سے یہ دعویٰ سامنے آیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سینئر مشیر اور داماد جیرڈ کشنر  ان کی جیب میں ہے۔ اطلاعات کے مطابق امریکی صدر کے داماد جیرڈ کشنر نے سعودی ولیعہد محمد بن سلمان کو ان سعودی شہزادوں کے بارے میں معلومات فراہم کیں جو ان سے مخلص نہیں تھے۔ ذرائع کے مطابق محمد بن سلمان نے ابوظہبی کے شہزادے محمد بن زید النہیان سے کہا تھا کہ جیرڈ کشنر ان کی جیب میں ہے۔ خیال رہے کہ دی انٹرسیپٹ کی رپورٹ ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب ایک ہفتے قبل وائٹ ہاؤس کی جانب سے جیرڈ کشنر کی اعلیٰ امریکی انٹیلی جنس تک رسائی کے لیے سیکیورٹی کلیئرنس کو منسوخ کردیا گیا تھا۔

عرب ذرائع کے مطابق سعودی کے بدنام زمانہ ولیعہد محمد بن سلمان امریکہ اور اسرائیلی کے ہاتھ میں بری طرح پھنس گئے ہیں۔ محمد بن سلمان نے امریکی دباؤ میں سعودی عرب میں وہابیت کے خاتمہ اور یہودیت کے فروغ کا بیڑا اٹھا رکھا ہے۔ محمد بن سلمان نے اسرائیل کے خلاف 70 سالہ سعودی فضائی پابندیوں کو بھی ختم کردیا ہے۔ عرب ذرائع کے مطابق معلوم نہیں کہ محمد بن سلمان جیرڈ کشنر کی جیب میں ہیں یا جیرڈ کشنر محمد بن سلمان کی جیب میں ہیں۔  ذرائع کے مطابق بظاہر ایسا معلوم ہوتا ہے کہ محمد بن سلمان ہی جیرڈ کشنر کی جیب میں ہیں جو امیرکہ کے اشاروں پر ناچ رہے ہیں۔

News Code 1879578

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 5 =