کابل میں امریکی یونیورسٹی پر حملے کی منصوبہ بندی پاکستان میں ہوئی

افغانستان کے صدر اشرف غنی نے پاکستان پر وہابی دہشت گردوں کی حمایت کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغان دارالحکومت کابل میں امریکی یونیورسٹی پرہونے والے دہشت گردانہ حملے کی منصوبہ بندی پاکستان میں ہوئي تھی ۔

مہر خبررساں ایجنسی نے افغان ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ افغانستان کے صدر اشرف غنی نے پاکستان پر وہابی دہشت گردوں کی حمایت کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغان دارالحکومت کابل میں امریکی یونیورسٹی پرہونے والے دہشت گردانہ  حملے کی منصوبہ بندی پاکستان میں ہوئي تھی ۔افغان صدر کی ویب سائٹ پر جاری بیان کے مطابق افغان صدر اشرف غنی کی زیر صدارت نیشنل سیکیورٹی کونسل کے اجلاس میں افغان انٹیلی جنس ایجنسی نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکیورٹی (این ڈی ایس) کے حکام کی جانب سے کہا گیا کہ یونیورسٹی پر حملے کے شواہد اور مشاہدات سے معلوم ہوتا ہے کہ حملے کی منصوبہ بندی پاکستان میں کی گئی، تاہم اس حوالے سے مزید تحقیقات کی جارہی ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ حملے کی اب تک کی تحقیقات کے حوالے سے اشرف غنی نے آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور حملے میں ملوث دہشت گردوں کے خلاف شواہد کی روشنی میں سنجیدہ اور عملی اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا۔ واضح رہے کہ کابل میں واقع امریکی یونیورسٹی پر دہشت گردوں کے حملے کے نتیجے میں 12 افراد ہلاک اور 44 زخمی ہوگئے تھے۔

News Code 1866467

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha