سری لنکا میں پٹرول بم کےحملوں میں مزید 3 مسلمان جاں بحق

سری لنکا میں ایمرجنسی نافذ ہونے کے بعد بھی مسلمانوں کی املاک اور مساجد پر حملوں کا سلسلہ جاری ہے جب کہ سخت سکیورٹی کے باوجود مسجد اور مسلمانوں کی دکانوں پر پٹرول بم سے حملوں کے دوران اب تک 3 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سری لنکا میں ایمرجنسی نافذ ہونے کے بعد بھی مسلمانوں کی املاک اور مساجد پر حملوں کا سلسلہ جاری ہے جب کہ سخت سکیورٹی کے باوجود مسجد اور مسلمانوں کی دکانوں پر پٹرول بم سے حملوں کے دوران اب تک 3 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق علاقے میں ابھی تک سوشل میڈیا اور انٹرنیٹ سروس معطل اور ایمرجنسی نافذ ہے،ایمرجنسی کے نفاذ کے باوجود بودھ انتہا پسندوں نے مسلمانوں کے گھر، دکانیں اور گاڑیاں جلا دیں، جلے ہوئے گھر سے ایک مسلمان نوجوان کی لاش ملی ہے، پولیس اہلکار بپھرے بودھ انتہا پسندوں کے سامنے بے بس نظر آئے جبکہ کینڈی میں تاحکم ثانی کرفیو نافذ ہے۔

ادھر 3 دنوں کے دوران بودھ انتہا پسندوں کے گروہوں کے حملوں میں 200 گھروں، دکانیں اور گاڑیوں کو نقصان پہنچایا گیا، سری لنکا میں مسلمانوں پر حملوں کے بعد اقوام متحدہ نے بھی پرزور مذمت کرتے ہوئے سری لنکن حکومت کو اقلیتوں کے تحفظ پر زور دیا ۔

News Code 1879245

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 10 =