ویانا میں ایران اور امریکہ کے درمیان مذاکرات انجام پذير نہیں ہوں گے

ایرانی حکومت کے ترجمان ویانا میں ایران اور گروپ 1+4 کے درمیان مذاکرات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ویانا میں ایران اور امریکہ کے درمیان مذاکرات انجام پذير نہیں ہوں گے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ایرانی حکومت کے ترجمان علی ربیعی ویانا میں ایران اور گروپ 1+4 کے درمیان مذاکرات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ویانا میں ایران اور امریکہ کے درمیان مذاکرات انجام پذير نہیں ہوں گے۔

انھوں نے کہا کہ ویانا اجلاس میں مشترکہ ایٹمی معاہدے میں واپس آنے اور اس پر عمل کرنے کے بارے میں تبادلہ خیال کیا جائےگا، لیکن اس اجلاس میں امریکہ اور ایران کے درمیان براہ راست یا غیر مستقیم مذاکرات کا کوئی پروگرام نہیں ہے۔ ربیعی نے کہا کہ مشترکہ ایٹمی معاہدے میں واپس آنے کے لئے ضروری ہے کہ امریکہ تمام غیر قانونی پابندیوں کو ختم کردے اور بین الاقوامی قوانین کا احترام کرتے ہوئے مشترکہ ایٹمی معاہدے میں واپس آجائے۔ انھوں نے کہا کہ ویانا اجلاس میںم شترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل کے سلسلے میں تبادلہ خیال کیا جائےگا۔ ایران اور امریکہ کے نمائندوں کے درمیان کسی قسم کے مذاکرات نہیں ہوں گے۔

News Code 1905973

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 5 =