غاصب صہیونی حکومت اور متحدہ عرب امارات نے ایکدوسرے کے شہریوں کو ویزے سے استثنی دیدیا

اسرائیل اور متحدہ عرب امارات نے چار اہم معاہدوں پر اتفاق کرلیا ہے جن میں سے ایک معاہدے میں ایکدوسرے کے شہریوں کو ملک میں داخلے کے لیے ویزے سے استثنیٰ دیدیا گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے العربیہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسرائیل اور متحدہ عرب امارات نے چار اہم معاہدوں پر اتفاق کرلیا ہے جن میں سے ایک معاہدے میں ایکدوسرے کے شہریوں کو ملک میں داخلے کے لیے ویزے سے استثنیٰ دیدیا گیا ہے۔ 

اطلاعات کے مطابق متحدہ عرب امارات سے اسرائیل پہنچنے والے وفد نے غاصب صہیوینی حکومت کے وزیراعظم نیتن یاہو سے ملاقات کی، قبل ازیں اہم حکام سے ملاقاتوں میں 4 معاہدوں پر اتفاق کرلیا گیا تھا جس کے بعد اسرائيلی وزیراعظم نیتن یاہو نے معاہدے پر دستخط کردیئے۔

اس معاہدے کے بعد عرب دنیا میں اماراتی پہلے شہری بن جائیں گے جنہیں اسرائیل میں داخل ہونے کے لیے اجازت نامے کی ضرورت نہیں ہوگی۔

واضح رہے کہ عرب ممالک میں سے مصر نے 1979 اور اردن نے 1994 میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کیا تھا جب کہ کئی برس بعد اب متحدہ عرب امارات اور بحرین نے بھی اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم فلسطینیوں، اسلام اور مسلمانوں کے ساتھ غداری کا عملی ثبوت دیا ہے۔ فلسطین نے بحرین اور متحدہ عرب امارات سے سفارتی تعلقات خۃم کردیئے ہیں۔

News Code 1903540

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 1 =