نوازشریف کا ضمانتی بانڈز دینے سے انکار

مسلم لیگ (ن) نے نوازشریف کی طرف سے ضمانتی بانڈز دینے سے انکار کر دیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مسلم لیگ (ن) نے نوازشریف کی طرف سے ضمانتی بانڈز دینے سے انکار کر دیا ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے نمائندے عطا اللّٰه‎ تارڑکا کہناہے کہ  "ذیلی کمیٹی سے معاملات میں ڈیڈ لاک ہے " اسلام آباد ہائی کورٹ اور لاہور ہائی کورٹ سےہماری ضمانت کے احکامات ہیں اور مچلکے وہاں جمع کرچکے ہیں‘ بانڈز دینے کی ضرورت نہیں ہےجبکہ وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم نے کہا ہے کہ وفاقی کابینہ کی ذیلی کمیٹی نے سابق وزیراعظم نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔

ہماری تجاویز کابینہ کے پاس جائیں گی ‘ ہم نے میرٹ پر فیصلہ دینا ہے ‘فیصلہ سنانے کے وقت کا ابھی تعین نہیں کیا گیا ہے۔جتنی جلدی ممکن ہوسکا ہم اپنی تجاویز کابینہ کو بھیج دیں گے ‘کابینہ کا حتمی فیصلہ ہماری سفارشات دینے کے بعد ہوگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کی شب ذیلی کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

مسلم لیگ (ن) کی جانب سے بانڈز جمع کرانے کے حوالے سے ایک سوال پر فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ ʼیہ میاں صاحب کی اپنی صوابدید ہے لیکن ہمارا فیصلہ کسی کی رضامندی پر منحصر نہیں بلکہ یہ فیصلہ میرٹ پر ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ کمیٹی کے اجلاس میں جتنی باتیں ہوئی ہیں وہ ان کیمرا ہیں لیکن صرف میرٹ پر فیصلہ ہوگا۔ قبل ازیں نواز شریف کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل)سے نکالنے کے معاملے پرفروغ نسیم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں فیصلہ محفوظ کرلیا گیا۔وزیراعظم کے معاون خصوصی شہزاد اکبر اور میڈیکل بورڈ کے سربراہ ڈاکٹر ایاز اجلاس میں شریک ہوئے۔مسلم لیگ(ن)کی جانب سے عطا تارڑ ، نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان اور قومی احتساب بیورو (نیب)کے حکام ذیلی کمیٹی اجلاس میں شریک ہوئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں شریک ن لیگ کے نمائندے عطا تارڑ نے نوازشریف کی طرف سے ضمانتی بانڈ دینے سے انکار کر دیا ہے۔

News Code 1895364

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 13 =