کراچی پولیس نے مستونگ خودکش بمبار کے باپ اور بھائی کو گرفتار کرلیا

کراچی پولیس کے سینٹرل ٹیررازم ڈپارٹمنٹ نے مستونگ میں ہونے والے حملے میں ملوث خودکش بمبار کے باپ اور بھائی کو گرفتار کر لیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ کراچی پولیس کے سینٹرل ٹیررازم ڈپارٹمنٹ نے مستونگ میں ہونے والے حملے میں ملوث خودکش بمبار کے باپ اور بھائی کو گرفتار کر لیا ہے۔ ایس ایس پی سی ٹی ڈی پرویز چانڈیو نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ مستونگ میں ہونے والے حملے کے بعد سے حملہ آور کے اہلخانہ روپوش تھے۔اس موقع پر نوید خواجہ، انچارج سی ٹی ڈی راجہ عمرخطاب اور مظہر مشوانی بھی موجود تھے۔پولیس حکام نے بتایا کہ گزشتہ روز انٹیلی جنس یونٹ نے خفیہ اطلاع پر کراچی کے علاقے بنارس میں کارروائی کی۔ایس ایس پی نے بتایا کہ مستونگ دھماکے کے خودکش بمبار حفیظ نواز کے والد محمد نواز اپنے بیٹے حق نواز کے ہمراہ افغانستان فرار ہونے کی کوشش کر رہے تھے جہاں ان کے دیگر اہلخانہ پہلے ہی منتقل ہو چکے ہیں۔پولیس حکام کے مطابق خودکش بمبار کے والد اور بھائی کے قبضے سے اسلحہ بھی برآمد ہوا۔ایس ایس پی سی ٹی ڈی کے مطابق پولیس کے انٹیلی جنس یونٹ نے گرفتار ملزمان کی نشاندہی پر منگھو پیر اور پرانی سبزی منڈی کے علاقوں میں بھی کارروائیاں کیں۔ایس ایس پی پرویز چانڈیو نے بتایا کہ کارروائیوں کے دوران خودکش بمبار کے 2 ساتھی پکڑے گئے جن کی شناخت شیراز اور ولی احمد کے ناموں سے ہوئی ہے، دونوں ملزمان نے افغانستان اور بلوچستان کے علاقے پنجگور سے تربیت حاصل کر رکھی ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ 13 جولائی کو مستونگ میں ہونے والے حملے میں بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار سراج رئیسانی سمیت 149 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔ سعودی عرب سےم نسلک وہابی دہشت گرد پاکستان میں وسیع پیمانے پر عدم استحکام پیدا کرکے پاکستان مخالف قوتوں کو خوش کررہے ہیں۔

News Code 1882953

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 13 =