سری لنکا میں کورونا ایس اوپیز کے بہانے فوج کا مسلمانوں پر تشدد/ انکوائری کا حکم

سری لنکا میں کورونا وائرس ایس اوپیز پر عمل درآمد کرانے کی ذمہ دار فوج نے اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے مسلمانوں کو تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سری لنکا میں کورونا وائرس  ایس اوپیز پر عمل درآمد کرانے کی ذمہ دار فوج نے اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے مسلمانوں کو تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔

سری لنکا میں مسلمانوں کی توہین اور تذلیل پر مبنی ویڈیو وائرل ہونے پر تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق سری لنکا میں لاک ڈاؤن کے دوران کورونا ایس اوپیز پر عمل درآمد کرانے کے دوران فوج نے مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک روا رکھا اور ان کی تذلیل کرتے ہوئے تشدد کا نشانہ بھی بنایا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر وائرل ہونے والی ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مسلمانوں کو سڑکوں پر ہاتھ کھڑے کرنے اور گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کیا جا رہا ہے جب کہ ایک قصبے میں مسلمان شہریوں کو روڈ پر گھسیٹا بھی گیا۔ویڈیوز میں یہ بھی دیکھا جا رہا ہے  کہ دیگر قومیتوں کے افراد کے ساتھ نرم دلی کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے اور انہیں معمولی تنبیہ کے بعد واپس گھر جانے کی اجازت دیدی گئی۔ ان ویڈیوز پر صارفین نے شدید احتجاج کیا تھا۔

سری لنکا کی حکومت نے مسلمانوں کے ساتھ ناروا سلوک روا رکھنے پر فوج کے خلاف انکوائری کا حکم دیدیا ہے ۔

سری لنکن فوج کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ایسے تمام فوجی اہلکاروں کے خلاف سخت تادیبی کارروائی کی جائے گی جن کے خلاف مسلمان شہریوں پر تشدد کرنے یا غیر اخلاقی سزائیں دینے کے شواہد مل گئے۔

News Code 1907047

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 16 =