ترکی اور ایران کی بحرین اور اسرائیل کے درمیان تعلقات کی شدید الفاظ میں مذمت

ترکی اور ایران نے بحرین اور اسرائیل کے درمیان سازشی معاہدے کو شرمناک اور فلسطینی کاز کے ساتھ بہت بڑي غداری قرار دیتے ہوئے اسے مسترد کردیا ہے.

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ترکی اور ایران نے بحرین اور اسرائیل کے درمیان سازشی معاہدے کو شرمناک اور فلسطینی کاز کے ساتھ  بہت بڑي غداری قرار دیتے ہوئے اسے مسترد کردیا ہے.دونوں ممالک کا کہنا ہے کہ اسرائیل سے شرمناک ڈیل کے ذریعے بحرین نے فلسطین کاز کو قربان کر دیا ہے۔ ترکی نے بحرین کی جانب سے  اسرائیل کو تسلیم کرنے کے فیصلے کی شدید مذمت کی ہے۔

ترک وزارت خارجہ نے کہا کہ اس سے فلسطینی مقاصد کو نقصان پہنچے گا۔بحرین کا فیصلہ اسرائیل کو فلسطین کی طرف ناجائز طریقوں اور فلسطینی زمینوں پر قبضے کو مستقل کرنے کی کوششوں کو جاری رکھنے کے لیے مزید حوصلہ افزائی کرے گا۔

 ترک وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ تنازع فلسطین کے پائیدار حل سے ہی خطے میں پائیدار امن قائم کیا جاسکتا ہے ۔ ادھر ایرانی وزارت خارجہ نے  بھی ایک بیان میں بحرین کے اقدام کو شرمناک قراردیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے۔  ایرانی وزارت خارجہ کے بیان کے مطابق متحدہ عرب امارات اور بحرین نے فلسطینی مسلمانوں کی تحریک آزادی کے ساتھ بہت بڑي خانت کی ہے۔ ایران کی وزارت خارجہ نے کہا کہ فلسطینیوں کے خلاف اسرائیل کے جنگی اور وحشیانہ جرائم میںم تحدہ عرب امارات اور بحرین بھی شریک ہوگئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق بحرین اور امارات کے بعد سعودی عرب بھی اسرائیل کو تسلیم کرلےگا۔ سعودی عرب اور اسرائیل کے درمیان خفیہ رابطوں کا سلسلہ جاری ہے۔ امارات اور بحرین کے شرمناک اقدام میں بھی سعودی عرب نے کلیدی کردار ادا کیا ہے۔

News Code 1902894

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 10 =