امریکی ايئر بیس عین الاسد پر ایرانی سپاہ کا دفاعی میزائل حملہ ایرانی عوام کا مطالبہ تھا

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے تہران میں آزادی اسکوائر پر ایک عظیم الشان ریلی سے خطاب میں پارلیمانی انتخابات میں عوام کی شرکت پر تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ عراق میں امریکی ايئر بیس عین الاسد پر ایرانی سپاہ کادفاعی میزائل حملہ ایرانی عوام کا مطالبہ تھا۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے تہران میں انقلاب اسلامی کی کامیابی کی 41 ویں سالگرہ کے موقع پر آزادی اسکوائر پر ایک عظیم الشان ریلی سے خطاب میں پارلیمانی انتخابات میں عوام کی شرکت پر تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ عراق میں امریکی ايئر بیس عین الاسد پر ایرانی سپاہ کا دفاعی میزائل حملہ ایرانی عوام کا مطالبہ تھا۔

صدر روحانی نے کہا کہ 41 سال قبل سن 1357 شمسی میں ماہ بہمن نے ہمیں اللہ تعالی کی طاقت اور قدرت دکھا دی تھی اور ثابت کردیا تھا کہ اللہ تعالی کس طرح اپنے حامیوں کی مدد کرتا ہے۔ ہم نے 22 بہمن میں حق کو اچھی طرح مشاہدہ کیا اور یہ سب کچھ اللہ تعالی کی طاقت اور قدرت کا مظہر تھا ۔ آٹھ سالہ مسلط کردہ جنگ میں تمام سامراجی اور استعماری طاقتیں اور عرب رجعت پسند طاقتیں عراق کے معدوم صدر صدام کے ساتھ تھیں لیکن اس کے باوجود اللہ تعالی نے ایرانی قوم کو فتح و ظفر عطا کی۔

صدر حسن روحانی نے انتخابات کی اہمیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ عوام کو آئندہ ایرانی پارلیمانی انتخابات میں بھر پور شرکت کرنی چاہیے کیونکہ ایرانی انتخابات ایرانی قوم اور ملک کی نجات کا مظہر ہیں۔

صدر حسن روحانی نے عراق میں امریکی ايئر بیس عین الاسد پر ایران کے دفاعی میزائل حملے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم  ایرانی مسلح افواج اور سپاہ کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنھوں نے شہید سلیمانی کی مظلومانہ شہادت کے بدلے میں امریکہ کے منہ پر ایک طمانچہ رسید کیا، ایران کی  مسلح افواج نے عوام کی امنگوں کے مطابق امریکہ کے ايئر بیس پر میزائلوں سےحملہ کیا۔ ایرانی عوام کا مطالبہ انتقام تھا اور ایران کی مسلح افواج نے عوام کے مطالبہ کو پایہ تکمیل تک پہنچا دیا۔

صدر روحانی نے کہا کہ ہم سب امریکہ کے خلاف متحد ہیں اور ہم باہمی اتحاد کے ساتھ امریکہ کی تمام گھناؤنی سازشوں اور کوششوں کو ناکام بنادیں گے۔

News Code 1897760

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 3 =