سری لنکا میں بدھ راہبوں کی دھمکیوں کے بعد مسلمان وزراء مستعفی

سری لنکا میں بدھ راہبوں کی طرف سے مسلسل دھمکیوں کے بعد مسلمان وزراء اور گورنرز نے مسلم برادری کی جان و مال کی حفاظت کی خاطر اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سری لنکا میں بدھ راہبوں کی طرف سے مسلسل دھمکیوں کے بعد  مسلمان وزراء اور گورنرز نے مسلم برادری کی جان و مال کی حفاظت کی خاطر اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق سری لنکا میں 9 مسلمان وزرا اور 2 صوبائی گورنرز نے مشترکہ پریس کانفرنس میں بدھ مت کے انتہا پسند راہبوں کی جانب سے دھمکیوں اور مسلمان برادری کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکامی پر اپنے عہدوں سے مستعفیٰ ہونے کا اعلان کردیا۔

مسلمان وزرا کا کہنا تھا کہ انتہا پسند بدھ راہب چرچ دھماکوں کے بعد مسلمانوں کیخلاف اشتعال انگیزی پھیلا رہے ہیں، گھروں پر حملے کیے جارہے ہیں، کاروبار تباہ کیا جا رہا ہے اور بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے اور ہم اپنے لوگوں کے تحفظ کے لیے کچھ نہیں کر پا رہے ہیں، اس لیے مستعفی ہو رہے ہیں۔

مسلمان وزرا اور صوبائی گورنرز کی جانب سے استعفی کا اعلان انتہا پسند بدھ راہب گناناسارا اور اس کے حواریوں کی جانب سے مسلمان وزراء کو عہدوں سے ہٹانے کے لیے الٹی میٹم دینے کے بعد کیا گیا، انتہا پسند بدھ راہب نے حکومت کو پُرتشدد مظاہروں کی دھمکی بھی دی ہے۔ واضح رہے کہ سری لنکا میں ایسٹر کے موقع پر گرجا گھروں اور ہوٹلوں میں ہونے والے خود کش حملوں میں 250 سے زائد افراد ہلاک جب کہ 500 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔ ان دھماکوں کی ذمہ داری داعش سے منسلک وہابی دہشت گرد گروہ نے قبول کی تھی ،جس کے بعد سے مسلمانوں پر عرصہ حیات تنگ کردیا گیا ہے۔

News Code 1891094

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 6 =