یورپ مہاجرین کے مسئلے کو سیاسی بنانے سے گریز کرے، اقوام متحدہ

مہاجرین سے متعلق اقوام متحدہ کے ادارے UNHCR کےسربراہ فلپو گرینڈی نے یورپین قیادت سے اپیل کی ہے کہ وہ مہاجرین کے مسئلے کو سیاسی بنانے سے گریز کرے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مہاجرین سے متعلق اقوام متحدہ کے ادارے UNHCR کےسربراہ فلپو گرینڈی نے یورپین قیادت سے اپیل کی ہے کہ وہ مہاجرین کے مسئلے کو سیاسی بنانے سے گریز کرے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے برسلز میں مہاجرین سے متعلق رپورٹ کے اجراء کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ رپورٹ کے مطابق گذشتہ سال مجموعی طور پر 139300 افراد یورپ میں داخل ہوئے جن میں سے بڑی تعداد سمندر کے ذریعے آئی۔ دستاب اطلاعات کے مطابق اس دوران 2275 افراد سمندر میں ڈوب کر ہلاک ہوگئے۔ جوکہ روزانہ کے حساب سے 6 اموات بنتی ہے۔ یہ صورتحال گذشتہ سالوں کے مقابلے میں بہتر رہی جب ہر 14 مہاجرین میں سے ایک شخص سمندر برد ہو رہا تھا۔

گزشتہ سال ہر 38 میں سے ایک شخص ڈوب کر زندگی ہارا۔ رپورٹ کے مطابق گذشتہ سال مہاجرین کی سب سے بڑی تعداد اسپین پہنچی جو65400 تھی۔ اس کے بعد یونان میں 50500 اور اٹلی میں یہ تعداد 23400 رہی۔ دوسری جانب مشرقی بلقان کے راستوں سے یورپ میں داخل ہونے کیلئے 24100 افراد نے بوسنیا ہرزیگوینا کا رخ کیا۔

رپورٹ کے مطابق یورپ کا رخ کرنے والے مہاجرین کی بڑی تعداد کا تعلق افغانستان، شام اور افریقی ممالک سے تھا جبکہ آنے والوں میں پاکستانی بھی شامل تھے ۔ رپورٹ کے مندرجات بیان کرنے بعد مختلف سوالوں کا جواب دیتے ہوئے UNHCR کے ہائی کمشنر نے یورپین قیادت کیجانب سے پہلے سے کیجانے والی کوششوں پر انہیں خراج تحسین پیش کرتے کہا کہ اس مسئلے پر سیاست نہ کی جائے۔ بلکہ تاریخ کے اس مشکل مرحلے پر ملکر اس صورتحال سے نمٹنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔

News Code 1887758

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 10 =