پاکستان کے کسٹمزحکام نے 20 کلو ہیروئین برآمد کرلی

پاکستان کسٹمز اہلکاروں نے ایک کارروائی کے دوران 20 کلو ہیروئین کی اسمگلنگ کی کوشش کوناکام بنادیا جس کی قیمت بین الاقوامی مارکیٹ میں20کروڑ روپے سے زائد بتائی جاتی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کسٹمز اہلکاروں نے ایک کارروائی کے دوران  20 کلو ہیروئین کی اسمگلنگ کی کوشش کوناکام بنادیا جس کی قیمت بین الاقوامی مارکیٹ میں20کروڑ روپے سے زائد بتائی جاتی ہے۔کسٹم آفیسر واصف ملک کا کہنا ہے کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ملک کے کسی ایئرپورٹ کے ڈپارچر پراتنی بڑی مقدار میں ہیروئین برآمد ہوئی ہے۔ انھوں نے بتایا کہ پیراور منگل کی درمیانی شب محمد عامر اور راحیلہ عامر نامی مسافرجوکہ میاں بیوی ہیں دوسوٹ کیسوں کے ہمراہ ای کے603 پرواز کے ذریعے دبئی کے راستے مالدیپ جارہے تھے، ان مسافروں کے ہیروئین سے بھرے دونوں سوٹ کیسز اے ایس ایف کے اسکینرز سے کلیئر ہوچکے تھے لیکن اسکیننگ مشین پر تعینات کسٹم آپریٹر نے اسکیننگ پکچر کو دیکھتے ہوئے شک کا اظہار کیا۔ جس پر دونوں سوٹ کیسوں کی ایگزامنیشن کی گئی تو اس بات کا انکشاف ہوا کہ دونوں سوٹ کیسوں کے خفیہ خانوں میں  10 کلو اعلیٰ معیار کی ہیروئین رکھی گئی ہے جسے ضبط کرلیا گیا۔ملزموں  کی نشاندہی پرگارڈن ایسٹ میں واقع ان کی رہائش گاہ پر چھاپہ مارا جہاں سے مزید 10 کلوہیروئین سے بھرے 2 سوٹ کیس برآمد ہوئے جس کے بعد ہیروئین کی اسمگلنگ میں ملوث محمد عامر اور راحیلہ عامرکے خلاف مقدمہ درج کر کے انھیں گرفتارکرلیا۔

News Code 1879204

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 1 =