کشمیر کے سابق وزراء اعلی کا آل پارٹی اجلاس میں شرکت کا فیصلہ

بھارت کے زیر انتظام جموں کشمیر کے سابق وزرائے اعلیٰ فاروق عبداللّٰہ اور محبوبہ مفتی نے بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کی آل پارٹی اجلاس میں شرکت کی دعوت قبول کرلی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے کشمیر ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارت کے زیر انتظام جموں کشمیر کے سابق وزرائے اعلیٰ فاروق عبداللّٰہ اور محبوبہ مفتی نے بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کی آل پارٹی اجلاس (اے پی سی) میں شرکت کی دعوت قبول کرلی ہے۔ اطلاعات کے مطابق کشمیر کی سیاسی جماعتوں کے اتحاد گپکار کا سری نگر میں فاروق عبداللہ کی رہائش گاہ پر اہم اجلاس ہوا، جس میں فاروق عبداللّٰہ کا کہنا تھا کہ گپکار ڈیکلیریشن کا موقف واضح ہے اور اس میں کوئی تبدیلی نہیں ہے۔

محبوبہ مفتی کا کہنا ہے کہ بھارتی حکومت دوحہ میں طالبان سے بات چیت کررہی ہے، انہیں کشمیر میں بھی بات چيت کرنی چاہیے، انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بھارت کو پاکستان سے بھی مذاکرات کرنے چاہییں۔

کشمیری رہنما مظفر شاہ نے کہا کہ آرٹیکل 370 اور 35 اے پر کسی بھی صورتحال میں سمجھوتہ نہیں ہوسکتا، کشمیری رہنما یوسف تاری گامی نے کشمیری قیدیوں کی رہائی یا ان کی کشمیر کی جیلوں میں منتقلی کا مطالبہ کیا۔

واضح رہے کہ مودی حکومت کی جانب سے اہم کشمیری سیاسی جماعتوں کی قیادت کو 24 جون کو دہلی میں آل پارٹی اجلاس میں شرکت کی دعوت دی گئی ہے۔

News Code 1907068

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 8 =