امریکی صدر نے کانگریس کی منتخب تارکین وطن خواتین کو امریکہ چھوڑنے کا مشورہ دیدیا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی نفرت آمیز پالیسیوں کو تنقید کا نشانہ بنانے پر صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کانگریس کی نو منتخب مسلم خواتین سمیت 4 تارکین وطن خواتین اراکین کو امریکہ چھوڑ کر اپنے وطن جانے کا مشورہ دیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کی رپورٹ کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وسط مدتی انتخابات میں منتخب ہو کر کانگریس کا حصہ بننے والی 4 تارکین وطن خواتین اراکین کو حکومت پر تنقید کرنے پر آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے اخلاقیات کی تمام حدیں پار کرلیں۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی نفرت آمیز پالیسیوں کو تنقید کا نشانہ بنانے پر صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کانگریس کی نو منتخب مسلم خواتین سمیت 4 تارکین وطن خواتین اراکین کو امریکہ چھوڑ کر اپنے وطن جانے کا مشورہ دیا ہے۔امریکی صدر نے چاروں اراکین اسمبلی کا نام لیے بغیر کہا کہ انہیں امریکہ میں طرز حکومت پر تنقید کرنے کے بجائے پہلے اپنے ممالک واپس جانا چاہیئے جو جرائم اور کرپشن کی آماج گاہ ہیں، پہلے اپنے ملک میں اچھی حکومت کی مثال قائم کریں پھر کسی دوسرے پر تنقید کریں۔

صدر ٹرمپ نے مزید کہا کہ اب ناکام ریاستوں سے تعلق رکھنے والے دنیا کی سب سے عظیم اور طاقت ور قوم امریکہ کو بتائیں گے کہ گڈ گورنس کیسے کی جاتی ہے؟ ذرا یہ اراکین اپنے ملک جائیں اور وہاں یہ سبق سکھائیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ اسپیکر نینسی پاول ان چاروں تارکین وطن خواتین کی واپسی کے لیے سفری انتظامات کرائیں گی تاکہ یہ خواتین اپنے ملک کے لیے بھی کچھ کام کرسکیں اور پھر آکر ہمیں بتائیں کہ کیسے حکومت کی جاتی ہے۔

News Code 1892181

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 4 =