طالبان کی کثیر القومی  آل افغان امن کانفرنس میں شرکت پر رضامندی

طالبان نے افغانستان میں جنگ کے خاتمے کے لیے قطر اور جرمنی کی تجویز کردہ کثیر القومی " آل افغان امن کانفرنس" میں شرکت کرنے پر رضامندی ظاہر کی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے الجزيرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ طالبان نے افغانستان میں جنگ کے خاتمے کے لیے قطر اور جرمنی کی تجویز کردہ کثیر القومی "  افغان امن کانفرنس" میں شرکت کرنے پر رضامندی ظاہر کی ہے۔

اطلاعات کے مطابق پاکستان اور افغانستان کے لیے جرمنی کے خصوصی نمائندے مارکس پوٹزیل کی جانب سے جاری بیان میں کثیرالقومی مذاکرات " افغان پیس کانفرنس " کے 7 اور 8 جولائی کو دوحہ میں انعقاد کا اعلان کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ان مذاکرات میں طالبان نے بھی شرکت کرنے پر رضامندی ظاہر کر دی ہے۔یہ کانفرنس قطر اور جرمنی کی مشترکہ کاوشوں کا نتیجہ ہیں تاہم طالبان نے کانفرنس میں شرکت کے لیے اپنی سابقہ شرط کو برقرار رکھا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ افغان طالبان کسی بھی ایسے مذاکراتی عمل کا حصہ نہیں بنیں گے جس میں کابل حکومت کا کوئی ایک نمائندہ بھی شریک ہو۔

طالبان کی شرط کے پیش نظر قطر اور جرمنی نے آل افغان پیس کانفرنس کے لیے افغانستان کے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والے بااثر افراد کو مدعو کیا ہے تاہم کابل انتظامیہ کے نمائندوں کو ذاتی حیثیت میں کانفرنس میں شرکت کی اجازت ہوگی۔

News Code 1891834

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 13 =