طالبان اور امریکہ کے درمیان مذاکرات معاہدوں کے ڈرافٹ کی تیاری کے ساتھ ختم

افغان طالبان اور امریکہ کے مابین دوحہ میں ہونے والے مذاکرات کے دوران فریقین کی جانب سے معاہدوں کا ڈرافٹ تو تیار کرلیا گیا ہے لیکن ان پر دستخط نہیں کیے گئے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے افغان ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ افغان طالبان اور امریکہ کے مابین دوحہ میں ہونے والے مذاکرات کے دوران فریقین کی جانب سے معاہدوں کا ڈرافٹ تو تیار کرلیا گیا ہے لیکن ان پر دستخط نہیں کیے گئے۔ دوحہ میں ہونے والے مذاکرات میں غیر ملکی افواج کے انخلا، دہشتگردی کے خاتمے اور القاعدہ کے خلاف کارروائیوں کے حوالے سے ڈرافٹ تیار کیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق امریکہ اپنی تمام شرائط منوانا چاہتا ہے لیکن طالبان یہ ماننے کو تیار نہیں ہیں۔ امریکہ کا موقف ہے کہ اگر طالبان نے ان کی ایک بات قبول کرنے سے بھی انکار کیا تو باقی قبول شدہ باتوں کی بھی کوئی حیثیت نہیں رہے گی۔ دوسری جانب طالبان نے بھی غیر ملکی افواج کے انخلا کی حتمی تاریخ دینے تک کسی قسم کی یقین دہانی کرانے سے انکار کردیا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ طالبان نے القاعدہ سمیت تمام دہشتگرد گروپوں کے ساتھ تعلقات ختم کرنے پر نہ صرف رضا مندی ظاہر کردی ہے بلکہ ان کے خلاف کارروائی کا بھی عندیہ دیا ہے۔ کہا جارہا ہے کہ افغانستان سے امریکی فوج کے انخلا کا بھی ڈرافٹ تیار کیا گیا ہے لیکن اس حوالے سے تفصیلات سامنے نہیں آسکی ہیں۔ فریقین کے مابین مذاکرات کا اگلا دور رواں ماہ کے اختتام پر دوحہ میں ہوگا۔

News Code 1888798

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 0 =