امریکہ نے اقوام متحدہ کے تائيد اور منظور شدہ 12 سالہ مذاکرات پرمبنی معاہدے کو توڑ دیا

اسلامی جمہوریہ ایران کےوزیر دفاع جنرل حاتمی نے امریکہ کی عہد شکنی اور منہ زوری کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ نے اس مشترکہ ایٹمی معاہدے کو توڑدیا جو 12 سال کے مذاکرات کے نتیجے میں حاصل ہوا تھا اور جسے اقوام متحدہ کی تائید اور حمایت حاصل تھی۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کےوزیر دفاع جنرل حاتمی نے امریکہ کی عہد شکنی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ نے اس مشترکہ ایٹمی معاہدے کو توڑدیا جو 12 سال کے مذاکرات کے نتیجے میں حاصل ہوا تھا اور جسے اقوام متحدہ کی تائید اور حمایت حاصل تھی۔

ایرانی وزیر دفاع نے امریکی صدر ٹرمپ کی طرف سے پیشگي شرط کے بغیر مذاکرات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے ایران کے خلاف نفسیاتی، اقتصادی اور سیاسی جنگ کا آغاز کررکھا ہے اور پیشگی شرط کے بغیر مذاکرات امریکہ کی ایران کے خلاف نفسیاتی جنگ کا حصہ ہے۔

جنرل حاتمی نے کہا کہ دنیا جانتی ہے کہ امریکہ نے 12 سالہ مذاکرات پر مبنی معاہدے کو توڑدیا جسے اقوام متحدہ نے منظور کیا تھا اور جسے عالمی برادری کی حمایت حاصل تھی۔

جنرل حاتمی نے کہا کہ امریکہ کی طرف سے مذاکرات کی جدید پیشکش محض ایک دھوکہ اور فریب ہے اور ایرانی حکام اور عوام امریکہ کے مکر و فریب سے آگاہ ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایرانی عوام اور حکام  باہمی اتحاد اور ہمدلی کے ساتھ  امریکہ کی طرف سے پیدا کردہ موجودہ مسائل اورمشکلات سے عبور کرجائیں گے۔

News Code 1882885

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 0 =