اسامہ بن لادن کے بیٹے کی نائن الیون حملے کے اصل ملزم کی بیٹی سے شادی

وہابی دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے معدوم سربراہ اسامہ بن لادن کے بیٹے حمزہ بن لادن نے نائن الیون حملے کے اصل مجرم محمد عطا کی بیٹی سے شادی کرلی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے گارڈین کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ وہابی دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے معدوم سربراہ اسامہ بن لادن کے بیٹے حمزہ بن لادن نے نائن الیون حملے کے اصل مجرم  محمد عطا کی بیٹی سے شادی کرلی ہے۔

اطلاعات کے مطابق اسامہ بن لادن کے بیٹوں احمد اور حسن العطاس نے انکشاف کیا ہے کہ ان کے سوتیلے بھائی 29 سالہ حمزہ بن لادن نے نائن الیون حملے کے اصل ملزم محمد عطا کی بیٹی سے شادی کرلی ہے۔احمد اور حسن العطاس نے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ حمزہ القاعدہ میں ایک اہم منصب پر فائز ہے اور امریکہ سے اپنے والد کے قتل کا بدلہ لینا چاہتا ہے۔ حمزہ کے ایک بھائی کو ایبٹ آباد میں جب کہ دوسرے بھائی سعد کو افغانستان میں قتل کردیا گیا تھا۔اسامہ بن لادن کے سوتیلے بھائی احمد العطاس نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ حمزہ بن لادن القاعدہ میں بہت متحرک ہیں لیکن وہ اس وقت کس ملک میں مقیم ہیں اس حوالے سے ہم کچھ نہیں جانتے، ہوسکتا ہے وہ اس وقت افغانستان میں ہوں، تاہم ہمارے خاندان نے حمزہ بن لادن سے تعلقات منقطع کردیئے ہیں۔واضح رہے کہ اسامہ بن لادن کی تیسری اہلیہ خیریہ صابر کے بیٹے حمزہ اپنے باپ کے مشن کے تکمیل اور قتل کا بدلہ لینے کا اعلان کر چکے ہیں۔ حمزہ بن لادن کی والدہ ایبٹ آباد کے اس کمپاؤنڈ میں مقیم تھیں جہاں اسامہ بن لادن کو امریکی اہلکاروں نے خفیہ آپریشن میں 2 مئی 2011 کو قتل کردیا تھا۔ ذرائع کے مطابق القاعدہ دہشت گرد تنظیم کی داغ بیل بھی امریکہ نے ہی ڈالی تھی اور امریکہ آج بھی تمام وہابی دہشت گرد تنظیموں کو براہ راست یا سعودی عرب کے ذریعہ کنٹرول کررہا ہے۔

News Code 1882843

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 15 =