مشترکہ ایٹمی معاہدے پر دوبارہ مذاکرات ناقابل قبول/ عراقی کردستان میں ریفرنڈم گہری سازش

خبر آئی ڈی: 4105999 -
اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں خطیب جمعہ نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے سلسلے میں دوبارہ مذاکرات کو ناقابل قبول قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ ایٹمی معاہدہ عالمی سند ہے جس پر دوبارہ مذاکرات ناممکن ہیں ۔عراقی کردستان میں ریفرنڈم اسلامی ممالک کے خلاف گہری امریکی اور اسرائیلی سازش کا حصہ ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے دارالحکومت تہران میں آیت اللہ سید احمد خاتمی کی امامت میںم نعقد ہوئی جس میں لاکھوں مؤمنین نے شرکت کی۔ خطیب جمعہ نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے سلسلے میں دوبارہ مذاکرات کو ناقابل قبول قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ ایٹمی معاہدہ عالمی سند ہے جس پر دوبارہ مذاکرات ناممکن ہیں ۔عراقی کردستان میں ریفرنڈم اسلامی ممالک کے خلاف گہری امریکی اور اسرائیلی سازش کا حصہ ہے۔ آیت اللہ خاتمی نے کہا کہ ترکی، ایران اور عراق کو باہمی تعاون کے ساتھ خطے میں جاری امریکی اور اسرائیلی سازش کو ناکام بنانا چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ خوش قسمتی سے کسی بھی اسلامی ممالک نے عراقی کردستان میں ہونے والے ریفرنڈم کو قبول نہیں کیا جو اس ریفرنڈم کی ناکامی کامظہر ہے ۔ خطیب جمعہ نے امریکی شہر لاس ویگاس میں بےگناہ امریکی شہریوں کے بہیمانہ قتل کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بےگناہ شہریوں کا قتل عام چاہے امریکہ میں ہو یا یمن میں  یا کسی دوسرے مقام پر ہو ہم اس کی مذمت کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ امریکی حکام کو دوسرے ممالک میں مداخلت کے بجائے اپنے شہریوں کو تحفظ فراہم کرنا چاہیے۔

تبصرہ ارسال

1 + 3 =