کراچی میں امام بارگاہ پر دہشت گردانہ حملے میں 13 سالہ بچہ  شہید ، 20 افراد زخمی

پاکستان کے شہرکراچی کے علاقے ایف سی ایریا میں واقع امام بارگاہ در عباس (ع) پر وہابی دہشت گردوں نے دستی بم سےحملہ کردیا جس کے نتیجے میں ایک 13 سالہ بچہ شہید اور 20 دیگر افراد زخمی ہوگئے ہیں جن میں بچے اور خواتین شامل ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے شہرکراچی کے علاقے ایف سی ایریا میں واقع امام بارگاہ عباس (ع) پر وہابی دہشت گردوں نے دستی بم سےحملہ کردیا جس کے نتیجے میں ایک 13 سالہ  بچہ  شہید اور 20 دیگر افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق موٹرسائیکل پرسوار دہشت گرد دستی بم پھینک کر فرار ہوگئے، حملے میں بچوں اور خواتین سمیت 20افراد زخمی بھی ہوئے ہیں، جنہیں اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔
پولیس کے مطابق ایف سی ایریامیں واقع درِعباس امام بارگاہ پردستی بم حملے میں جاں بحق ہونے والے بچے کی شناخت فراز کے نام سے ہوئی ہے جس کی عمر 13سال تھی۔
پولیس کا کہنا ہے کہ زخمیوں میں نواب احمد، شمیم رضا، محمد رضا، سلمیٰ محمد،جمیلہ منظور، غوثیہ حیدر، شمیم سبحان، فیضان ایوب شامل ہیں۔
ایڈیشنل آئی جی مشتاق مہر کا واقعے کے حوالے سے کہنا ہے کہ محرم الحرام میں تمام مجالس کوسیکیورٹی فراہم کر رہے ہیں،دیکھ رہےہیں کہ اس مجلس کےوقت سکیورٹی کیوں نہیں تھی۔
ادھر مجلس وحدت مسلمین کے ترجمان نے امام بارگاہ پر دستی بم حملےکی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ امام بارگاہ درعباسمیں خواتین کی مجلس ہورہی تھی، کریکر حملے میں ایک بچہ جاں بحق جبکہ 20 افرادزخمی ہوئے ہیں۔

News Code 1867664

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 2 =