امریکی جنرل غیر اخلاقی اورجنسی تعلقات کی وجہ سے عہدے سے برطرف

ایک امریکی جنرل کو شادی کے بغیر غیر اخلاقی اور جنسی تعلقات قائم کرنے اور وسائل کے غلط استعمال پر عہدے سےبرطرف کر دیا گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ایک امریکی جنرل کو شادی کے بغیر غیر اخلاقی تعلقات قائم کرنے اور وسائل کے غلط استعمال پر عہدے سےبرطرف کر دیا گیا ہے۔  اطلاعات کے مطابق ایسے تعلقات فوجی قانون کی خلاف ورزی ہیں اور اس سے فوجی افسر کو بلیک میل کئے جانے کا خدشہ پیدا ہوتا ہے۔

انویسٹی گیشن کے مطابق میجر جنرل ڈیوڈ ہائیٹ نے 2005ء میں عراق میں ملنے والی خاتون کنٹریکٹر سے 10 سال تک تعلقات استوار رکھے اور آوارہ طرز زندگی اختیار کئے رکھا۔ یو ایس اے ٹوڈے کے مطابق میجر جنرل ڈیوڈ ہائیٹ شادی شدہ اور چار بچوں کے والد ہیں تاہم وہ اپنے دوست جینیفر آرمسٹرانگ کے ساتھ باقاعدہ کلبوں میں جاتے اور دیگر جوڑوں کے ساتھ پارٹیوں میں شرکت کرتے رہے۔وہ ایڈمرل مائیک مولن کے مشیر رہے ہیں۔ ڈیوڈ ہائٹ اور مسز آرمسٹرانگ کا معاشقہ 10 سال بعد 2015ء میں ختم ہوگیا۔ ہائیٹ پر آرمسٹرانگ کو فون کالز کرنے اور ای میلز بھیجنے کیلئے وسائل کے غلط استعمال کا الزام بھی عائد کیا گیا ہے۔ انہوں نے سرکاری فون سے آرمسٹرانگ کو 1400 منٹ کی کالز کی تھیں جس کی وجہ سے انھیں عہدے سے برطرف کردیا گیا ہے۔

News Code 1866528

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 14 =