پاکستان کا کوئی بھی وزير اعظم اپنی مدت پوری نہیں کرسکا/امریکہ اور سعودی عرب کا گہرا نفوذ

پاکستان کا کوئی بھی وزیر اعظم اپنی پانچ سالہ مدت پوری نہیں کرسکا ، جس کی اصل وجہ امریکہ اور سعودی عرب کا پاکستان میں گہرا نفوذ ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کا کوئی بھی وزیر اعظم اپنی پانچ سالہ مدت پوری نہیں کرسکا ، جس کی اصل وجہ امریکہ اور سعودی عرب کا پاکستان میں گہرا نفوذ ہے۔ امریکہ کی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے جو پاکستان میں امریکہ اور سعودی عرب کے گہرے نفوذ کا مظہر ہے، امریکہ پاکستان میں بعض جگہ براہ راست مداخلت کرتا رہتا ہے اور بعض جگہ وہ اپنے منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کے لئے سعودی عرب کے پاکستان میں نفوذ سے استفادہ کرتا ہے۔

پاکستان کے سال 1947میں معرض وجود میں آنے کے بعد سے اب تک کسی بھی منتخب وزیر اعظم نے اپنی پانچ سالہ مدت پوری نہیں کی اور عمران خان اس فہرست میں شامل 19ویں شخص ہیں۔

ڈان کے مطابق عمران خان پہلے وزیراعظم ہیں جنہیں عدم اعتماد کی قرارداد کے آئینی اقدام کے ذریعہ ہٹایا گیا ہے۔

ملک کے سب سے پہلے وزیر اعظم لیاقت علی خان کو 16 اکتوبر 1951 کو قتل کر دیا گیا تھا۔

ان کے بعد 7 وزرائے اعظم مستعفی ہوئے، 5 کو برطرفی کا سامنا کرنا پڑا، جب کہ 4 وزرائے اعظم کی حکومتیں فوجی بغاوتوں کے ذریعے معزول کر دی گئیں۔

نواز شریف اور یوسف رضا گیلانی وہ دو افراد تھے جنہیں سپریم کورٹ کی جانب سے سزا سنائے جانے کی باعث نااہل قرار دیا گیا تھا۔

شوکت عزیز، راجہ پرویز اشرف اور شاہد خاقان عباسی وہ اشخاص ہیں جنہوں نے قومی اسمبلی کی 5سالہ مدت پوری ہونے پر عہدہ چھوڑا لیکن انہوں نے اپنے پیش رووں کی نااہلی اور استعفیٰ کے بعد باقی ماندہ مدت پوری کرنے کے لیے ہی یہ عہدہ سنبھالا تھا۔

اس فہرست میں شامل نواز شریف واحد شخص ہیں جنہیں اپنے تین ادوار میں چار مرتبہ ملک کا اعلیٰ عہدہ چھوڑنا پڑا۔

سعودی عرب کا پاکستان میں اتنا نفوذ ہے کہ اس نے  پاکستان کے معزول وزیر اعظم عمران خان کو ملائشیا میں او آئي سی کے سربراہی اجلاس میں شرکت کرنے سے روک دیا تھا جبکہ اس اجلاس کے ایک میزبان خود عمران خان تھے۔ پاکستانی وزیر اعظم سعودی عرب کے جہاز میں سوار ہوکر اقوام متحدہ گئے لیکن واپس کسی دوسرے جہاز سے آئے۔ سعودی عرب نے اپنا جہاز واپسی پر دینے سے انکار کردیا تھا ۔ سعودی عرب نے بہت پہلے امریکہ کے ساتھ ملکر عمران خان کو اقتدار سے الگ کرنے کا فیصلہ کرلیا تھا۔ پاکستان سعودی عرب کے سامنے بالکل بے بس نظر آتا ہے۔ عمران خان نے سعودی عرب اور امریکہ کو سمجھنے میں بہت دیر کی جس کا اسے خمیازہ بھگتنا پڑا ۔

News Code 1910449

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha