آیت اللہ سید ابراہیم رئیسی کا انتخاب انقلاب اسلامی کے تسلسل کا مظہر ہے

پاکستان شیعہ علماءکونسل شمالی پنجاب کے صدر نے انقلاب اسلامی کے مضبوط اور مستحکم ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہا ہےکہ ایران کے تیرہویں صدارتی انتخابات میں آیت اللہ سید ابراہیم رئیسی کا انتخاب انقلاب اسلامی کے تسلسل کا مظہر ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق شیعہ علماءکونسل شمالی پنجاب کے صدر علامہ سید سبطین حیدر سبزواری نے آیت اللہ سید ابراہیم رئیسی کو اسلامی جمہوریہ ایران کا صدر منتخب ہونے  پر مبارکباد  پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک بار پھر ممتاز عالم دین ، چیف جسٹس اور فقیہہ کا بھاری اکثریت سے کامیاب ہونا اس بات کی دلیل ہے کہ امام خمینی (رہ) کی قیادت میں 42 سال پہلے آنے والے انقلاب اسلامی کا تسلسل برقرار ہے ۔ امریکی سازشیں ناکام ہوچکی ہیں۔ ہارنے والے کسی صدارتی امیدوار نے انتخابی دھاندلی کا الزام عائد نہیں کیا، جس سے امریکی اور اسلامی جمہوریت میں فرق صاف نظر آگیا ہے ۔ٹرمپ اور جوبائیڈن کے انتخابات میں دھاندلی کے الزامات عائد کیے گئے جبکہ ایران کے صدارتی الیکشن میں ایسا نہیں ہوا ۔اس کا مطلب ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کا نظام مضبوط اور مستحکم  ہے ۔

تہنیتی پیغام میں علامہ سبطین سبزواری نے توقع ظاہر کی کہ نئے صدر، ولی امرالمسلمین آیت اللہ سید علی خامنہ ای کی پالیسی کے مطابق ایرانی عوام کی خدمت کریں گے ۔خاص طور پر معیشت کی بحالی اور امریکہ کے ساتھ تعلقات میں عالم اسلام کے مفادات کا خاص خیال رکھیں گے۔ بیت المقدس کی آزادی، اور دنیا بھر کے مظلو م عوا م کی ایران سے وابستہ توقعات پوری ہوںگی ۔

News Code 1907040

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 12 =