بحرین کا اپنے شہریوں کو ایران سے وطن واپس نہ لانے کا اقدام غیر انسانی ہے

پروفیسر نادر انتصار کا کہنا ہے کہ بحرینی حکومت نے ایران میں زیارت کے لئے سفر کرنے والے بحرینی شہریوں کو وطن واپس لانے میں عدم تعاون کا ثبوت دیکر انسانی، اسلامی اور اخلاقی معیاروں کی خلاف ورزی کا ارتکاب کیا ہے۔

امریکی یونیورسٹی الاباما کے پروفیسر نادر انتصار نے مہر خبررساں ایجنسی کے بین الاقوامی امور کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ بحرینی حکومت نے ایران میں زیارت اور سیاحت کے لئے سفر کرنے والے بحرینی شہریوں کو وطن واپس لانے میں عدم تعاون کا ثبوت دیکر  انسانی، اسلامی اور اخلاقی معیاروں کی خلاف ورزی کا ارتکاب کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ سبھی ممالک اپنے شہریوں کو وطن واپس بلانے میں عملی اقدام انجام دے رہے ہیں ۔ اس وقت ایران میں 1300 بحرینی زائرین اور سیاح وطن واپس جانے کے لئے آمادہ ہیں اور ایران نے بھی اس سلسلے میں ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے لیکن اس کے باوجود بحرینی حکومت کی جانب سے عدم تعاون کا سلسلہ جاری ہے ۔ انھوں نے کہا کہ بحرینی حکومت کا یہ اقدام بین الاقوامی ، انسانی اور اسلامی قوانین کے باکل منافی ہے۔ پروفیسر نادر انتصار نے مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی طرف سے بحرین میں شیعہ مسلمانوں پر بحرینی حکومت کے دباؤ پر مبنی سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ بحرینی حکومت کی بحرین کے شیعہ مسلمانوں کے ساتھ دشمنی اور عداوت میں کوئی شک و شبہ نہیں اور اس کا بحرین کے شیعہ مسلمانوں پر دباؤ برقرار ہے ، بحرینی حکومت نے بحرین کے شیعہ مسلمانوں کو سیاسی میدان سے خارج کرنے کے سلسلے میں ہر قسم کا ظلم و ستم اختیار کیا ہے۔ پروفیسر نادر انتصار نے مغربی ممالک کی طرف سے بحرینی حکومت کے ظالمانہ اقدامات پر خاموشی کے بارے میں مہر کے نامہ نگار کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اس سوال کا جواب واضح ہے بحرین کی موجودہ حکومت امریکہ کی آلہ کار حکومت ہے اور امریکہ نے ہمیشہ اپنے آلہ کار ڈکٹیٹر بادشاہوں کی حمایت کی ہے امریکہ دنیا میں جمہوریت کا حامی نہیں بلکہ وہ اپنے مفادات کا حامی ہے وہ ایسے ممالک کو دوست رکھتا ہے جو اس کے مفادات کو تحفظ فراہم کریں اور اس سے بڑے پیمانے پر ہتھیار خریدیں۔

News Code 1898518

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 2 =