پاکستان نے سکھوں کے لئے کرتار پور راہداری کھول دی

پاکستان نے سکھ مت کے بانی بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن پر سکھ یاتریوں کے لیے آج سے کرتار پور راہ داری کھول دی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان نے سکھ مت کے بانی بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن پر سکھ یاتریوں کے لیے آج سے کرتار پور راہ داری کھول دی ہے۔ افتتاحی تقریب گوردوارے کے احاطے میں منعقد ہوئی جس میں بھارت سمیت دنیا بھر سے سکھ یاتریوں کی بڑی تعداد کے علاوہ وفاقی و صوبائی وزراء نے بھی شرکت کی۔

بھارتی پنجاب کےسابق کرکٹر اور سیاستدان نوجوت سنگھ سدھو سمیت سکھ کمیونٹی سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات افتتاحی تقریب میں شریک ہیں۔

حکومتِ پاکستان نے 11 ماہ میں کرتار پور راہداری کی تعمیر ریکارڈ مدت میں مکمل کر لی اور گوردوارہ دربار صاحب کو دنیا کا سب سے بڑا گوردوارہ بنا دیا۔

سکھ یاتری اسے بابا گورونانک کے 550 ویں جنم دن پرحکومتِ پاکستان کی طرف سے تحفہ قرار دے رہے ہیں، بھارتی سکھ یاتریوں کی طرف سے لائی گئی سونے کی پالکی یہاں نصب کر دی گئی ہے۔

حکام کی طرف سے بتایا گیا کہ گوردوارہ دربار صاحب پہلے 4 ایکڑ پر محیط تھا، اب اسے 42 ایکڑ پر وسعت دے کر دنیا کا سب سے بڑا گوردوارہ بنا دیا گیا ہے۔

ارد گرد کی 8 سو ایکڑ اراضی بھی گوردوارے کے لیے مختص کر دی گئی ہے، جبکہ گوردوارے سے ملحقہ 26 ایکڑ اراضی پر باغات اور 36 ایکڑ پر فصلیں اگائی گئی ہیں، تزئین و آرائش کے علاوہ یہاں بارہ دری، لائبریری، میوزیم، مہمان خانہ اور لنگر خانہ بھی تعمیر کیا گیا ہے۔

کرتار پور راہداری ویزہ فری ہے، بھارتی سکھ یاتری پاسپورٹ اسکین اور بائیو میٹرک تصدیق کروا کر صرف 20 ڈالر فی کس سروس چارجز ادا کر کے آسکیں گے تاہم جذبۂ خیر سگالی کے تحت 9 نومبر یعنی آج افتتاح کے موقع پر اور 12 نومبر بابا گرونانگ کے جنم دن کے موقع پر انٹری فری ہے۔

بھارت سے آنے والے یاتری صبح آ کر شام کو واپس چلے جایا کریں گے، کرتار پور راہداری کے راستے یومیہ 5 ہزار یاتری آ سکیں گے، گوردوارے کی سیکیورٹی کے لیے 215 سی سی ٹی وی کیمرے نصب کیے گئے ہیں، مرد اور خواتین سکھ یاتریوں کے لیے الگ الگ تالاب بھی بنائے گئے ہیں۔ پاکستان میں سکھوں کے 2مقدس ترین مقامات ہیں، پہلا جنم استھان ننکانہ صاحب ہے، جہاں سکھ مذہب کے بانی بابا گورونانک دیو جی کی پیدائش ہوئی اور دوسرا گوردوارہ دربار صاحب کرتار پور ہے، جہاں بابا گورونانک نے اپنی عمر کے آخری 18 سال گزارے اور یہیں وفات پائی۔

News Code 1895256

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 9 =