سعودی عرب میں عورتوں کو ریسلنگ کی اجازت/ سعودی مغربی ثقافت پر گامزن

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں رواں ماہ 11 اکتوبر سے شروع ہونے والے میوزیکل اور مغربی ثقافتی میلے " ریاض سیزن " میں پہلی بار خواتین کی ریسلنگ ہوئی جسے دیکھنے بڑی تعداد میں شائقین میلے میں پہنچے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے فاکس بزنس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں رواں ماہ 11 اکتوبر سے شروع ہونے والے میوزیکل اور مغربی ثقافتی میلے " ریاض سیزن " میں پہلی بار خواتین کی ریسلنگ ہوئی جسے دیکھنے بڑی تعداد میں شائقین میلے میں پہنچے۔ اطلاعات کے مطابق اس مقابلے میں 29 سالہ امریکن ریسلر لیسی ایونز اور 37 سالہ کینیڈین ریلسر نتالیا نیدھرت ایک دوسرے کے مدمقابل نظر آئیں۔ تاہم نتالیا نیدھرت نے لیسی ایونز کو ہرا کر مقابلہ اپنے نام کرالیا۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ  یہ دونوں خاتون ریسلر انتہائی مختصر لباس میں ایک دوسرے سے فائٹ کرتی نظر آئیں ۔ شاہدین کا کہنا ہے کہ سعودی عرب ملک میں مغربی ثقافت کو فروغد یکر اسلامی ثقافت کا جنازہ نکال رہا ہے۔ ریسلنگ کے دوران ان دونوں خواتین کے جسم حصے نمایاں تھے۔ واضح رہے کہ سعودی عرب نے مغربی کمپنیوں کو ملک میں سینما ہال کھولنے کی بھی اجازت دیدی ہے۔

News Code 1895043

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 16 =